کاشتکاروں کو رقوم کی عدم ادائیگی ،لاہورر ہائیکورٹ کا برادر شوگرمل کی چینی کے سٹاک کو فروخت کر کے رپورٹ پیش کرنے کا حکم

کاشتکاروں کو رقوم کی عدم ادائیگی ،لاہورر ہائیکورٹ کا برادر شوگرمل کی چینی ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے گنے کے کاشتکاروں کو رقوم کی عدم ادائیگی پر برادر شوگر مل کی چینی کے سٹاک کوفروخت کر کے رپورٹ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیاہے۔عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دئیے کہ کسانوں کے حقوق کا تحفظ اولین ترجیح ہے،عدالت قانون کے مطابق کاروائی جاری رکھے گی۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے کیس کی سماعت کی۔عدالتی سماعت کے موقع پر کسانوں کے وکلاء نے عدالت کو آگاہ کیا کہ نجی شوگر ملوں نے کسانوں کی جانب سے گنا فراہم کرنے کے باوجود بیاسی کروڑ روپے کی رقم دبا رکھی ہے جس سے انہیں نئے سیزن کی کاشتکاری میں بھی مشکلات درپیش ہیں جبکہ وہ شدید مالی بحران کا سامنا کر رہے ہیں۔ عدالتی حکم پر شوگر کین کمشنر نے بینکوں کے پاس شوگر مل کی رہن شدہ چینی اور کین کمشنر کے پاس موجود چینی کے سٹاک کی تفصیلات سے عدالت کو آگاہ کیا۔انہوں نے عدالت کو بتایا کہ کین کمشنر کے پاس چینی کی 4 لاکھ بوریاں اور بینکوں کے پاس 2لاکھ 9 ہزار بوریاں موجود ہیں۔کین کمشنر کے پاس موجود شوگر کی رقم ایک کروڑ 20 لاکھ کے قریب بنتی ہے جبکہ شوگر مل نے کسانوں کے 82کروڑ روپے ادا کرنے ہیں،کین کمشنر نے چینی فروخت کرنے کے عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کے لئے عدالت سے مزید مہلت طلب کی جس پر عدالت نے کیس کی مزید سماعت 6ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے کین کمشنر سے عمل درآمد رپورٹ طلب کرلی ہے۔

فروخت

مزید : صفحہ آخر