فرانسیسی جریدے چارلی ہیبڈو میں برہنہ مسلمان جوڑے کی تصویر شائع

فرانسیسی جریدے چارلی ہیبڈو میں برہنہ مسلمان جوڑے کی تصویر شائع

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) بدنام زمانہ فرانسیسی میگزین چارلی ہیبڈو اپنی گزشتہ مکروہ حرکت کے باعث فرانس کو شدت پسندی سے دوچار کرنے کے باوجود اپنی حرکتوں سے باز نہیں آیا۔ اس نے ایک بار پھر اپنے فرنٹ پیج پر ایک ایسی تصویر چھاپ دی ہے جس کو دیکھ کر ہر مسلمان غصے سے بپھر جائے۔ برطانوی اخباردی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق اس بار چارلی ہیبڈو میں نے ایک برہنہ مسلمان جوڑے کی تصویر چھاپی ہے۔ کینیس میں مسلمانوں کے اسلامی لباس پہن کر ساحل سمندر پر جانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ میگزین نے یہ تصویر اسی معاملے پر مسلمانوں کا تمسخر اڑانے کے لیے شائع کی ہے۔ رپورٹ کے مطابق تصویر کے نیچے لکھا گیا ہے کہ ’’اسلام کی اصلاح، مسلمانوں کو (اسلامی لباس سے) سکون مل گیا۔‘‘اسلام اور مسلمانوں کی اس توہین پر چارلی ہیبڈو کے فیس بک پیج پر اسے ایک سنگین نتائج کی دھمکی بھی موصول ہو چکی ہے۔ ایک دھمکی میں کہا گیا ہے کہ ’’جلد تمہارے دفتر پر حملہ کرکے تمہیں موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا۔‘‘پولیس کی تحقیقات میں بتایا گیا ہے کہ میگزین کو جولائی اور اگست میں 60سے زائد دھمکیاں دی جا چکی ہیں۔ واضح رہے کہ گستاخانہ خاکے چھاپنے پر میگزین کے دفتر پر حملہ کیا گیا تھا جس میں اس کے عملے کے 10افراد ہلاک ہو گئے تھے۔آج تک میگزین کے دفتر کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے۔

مزید : صفحہ آخر