حکومت ،سیکیورٹی ادارے سانحہ کو ئٹہ میں ملوث عناصر کو انجام تک پہنچائیں :فضل الرحمٰن

حکومت ،سیکیورٹی ادارے سانحہ کو ئٹہ میں ملوث عناصر کو انجام تک پہنچائیں :فضل ...

کوئٹہ(اے این این) جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانافضل الرحمن نے کہاہے کہ سانحہ کوئٹہ پر آنکھ نم ہے ، حکومت اور سکیورٹی اداروں کو واقعہ میں ملوث عناصر کو انجام تک پہنچانا ہوگا،حکومت مستقبل میں ایسے واقعات سے بچنے کیلئے خامیاں تلاش کرکے انہیں دور کرے ،پالیسیوں کا ازسرنو جائزہ لیا جائے ،پوری دنیامیں صرف مسلمان ہی دہشت گردی کے کرب کاشکارہیں ، ہمیں فرقہ واریت اورلسانیت سے نکل کر متحد ہونا ہو گا ۔ان خیالات کااظہارانہوں نے بلوچستان ہائی کورٹ میں بارایسوسی ایشن کے تعزیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پرمولانافیض محمد،مولاناعصمت اللہ،ملک سکندرایڈوکیٹ اوروکلاء کی بڑی تعدادموجودتھی۔ مولانافضل الرحمن نے کہا کہ سانحہ کوئٹہ نے پوراملک سوگوارکردیا،ہرشخص کادل زخمی اورہرآنکھ اشکبارہے،بلوچستان کاناقابل تلافی نقصان ہوا ،حکومت اوراداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ سانحہ کوئٹہ میں ملوث عناصرکوبے نقاب کریں ،مستقبل میں اس طرح المناک واقعات کی روک تھام کے لئے موثراقدامات اٹھائیں حکومت دیکھے کہ خامیاں کیاہیں اوران کودورکرے اورپالیسیوں کاازسرنوجائزہ لے،سانحہ کوئٹہ کوسنجیدگی سے لیاجائے ۔مولانافضل الرحمن نے کہاکہ اسلام کامعنی سلامتی دینااورایمان کامعنی امن دیناہے حضورصلی اللہ علیہ وسلم تمام انسانیت کے لئے امن کاپیغام لیکرآئے تھے ،آج عراق ، افغانستان ، شام ، صومالیہ ، چیچنیا ، کشمیرسمیت دیگراسلامی ممالک پرمصنوعی دہشت گردی کے خلاف جنگ مسلط کررکھی ہے ہمارادشمن ایک ہے،ہم نے جرات،ہمت اورحوصلے کے ساتھ ان حالات کامقابلہ کرناہوگا انہوں نے کہاکہ پوری دنیامیں مسلمان ہی دہشت گردی کے کرب کاشکارہیں مسلمانوں پرآج دنیابھرمیں استعماری قوتیں مظالم ڈھارہی ہیں مسلمانوں کوفرقہ واریت اورلسانیت کے تفرقہ سے نکل کردین اسلام کے آفاقی نظام اوراسلام کے پیغام امن کوعام کرناہوگاقرآن نے امن اورخوشحال معیشت پرزوردیاہے جنگ امریکہ کی ضرورت ہے آج تمام اسلامی ممالک میں کشت وخون کی صورتحال ہے ان حالات میں ہمیں متحدہوکرچلناہوگاانہوں نے شہیدوکلاء کے درجات کی بلندی اورزخمیوں کی جلدصحت یابی کے لئے دعاکی۔

مزید : صفحہ آخر