پاکستان کی بھارت کو کشمیر پر پھر مذاکرات کی دعوت ،بھارت کا انکار

پاکستان کی بھارت کو کشمیر پر پھر مذاکرات کی دعوت ،بھارت کا انکار

اسلام آباد (آن لائن) پاکستان نے بھارت کو مسئلہ کشمیر پر بات چیت کیلئے با ضابطہ طور پر دعوت دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ملکوں کے مابین اوپن تنازعہ مسئلہ کشمیر ہے ،اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد کرتے ہوئے مسئلہ کو حل کرنا چاہیے۔ پاکستانی سیکرٹری خارجہ اعزاز چوہدری نے پیر کے روز پاکستان میں بھارت کے ہائی کمشنر گوتم بمبا نوالے کے ساتھ دفتر خارجہ میں ملاقات کی جس میں انہوں نے یہ دعوت دی ۔ دفتر خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے سیکرٹری خارجہ کی جانب سے بھارتی ہائی کمشنر کو بھارتی سیکرٹری خارجہ کے نام ایک خط دیا گیا ہے جس میں انہیں پاکستان کے د ورے اور کشمیر کے مسئلے پر دو طرفہ مذاکرات کرنے کی دعوت دی گئی ہے۔ خط میں لکھا گیا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان اوپن تنازعہ مسئلہ کشمیر ہے، کشمیریوں کی آزادی کی تحریک کو بھارت طاقت کے ذریعے دبا نہیں سکتا۔ دونوں ممالک پر عالمی ذمہ داری ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کو حل کریں۔

نئی دہلی(خصوصی رپورٹ) بھارت نے ایک بار پھر اپنی روایتی ڈھٹائی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کشمیر پر مذاکرات کے بارے میں پاکستان کی پیشکش مسترد کر دی ہے۔ایک ٹی وی انٹرویو میں بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کے ساتھ صرف سرحد پار دہشت گردی، ممبئی اور پٹھان کوٹ حملوں اور متعلقہ ایشوز پر بات ہو سکتی ہے۔ سشما سوراج کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کے مسئلے پر پاکستان کے ساتھ کوئی بات نہیں ہو سکتی۔ پاکستان نے دہشت گردی کیخلاف کوئی اقدامات نہیں کئے۔ پاکستان کو چاہیے کہ وہ سرحد پار دہشت گردی کا سلسلہ بند کرے۔اس لیے اس کے ساتھ بات چیت نہیں ہو سکتی، بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا کہ دہشت گردی کا خاتمہ ہمارے لئے مرکزی چیز ہے۔ واضح رہے کہ پاکستان کی جانب سے سیکرٹری خارجہ اعزاز چودھری نے اپنے بھارتی ہم منصب کو ایک خط میں کشمیر پر مذاکرات کیلئے اسلام آباد آنے کی دعوت دی تھی۔

مزید : صفحہ اول