اپریل 2018 تک ہر گاؤں میں فلٹریشن پلانٹ مہیا کیا جائیگا، نذیر ارائیں

اپریل 2018 تک ہر گاؤں میں فلٹریشن پلانٹ مہیا کیا جائیگا، نذیر ارائیں

بورے والا(تحصیل رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ ن کے ممبرقومی اسمبلی چوہدری نذیراحمدارائیں اورممبرپنجاب اسمبلی چوہدری ارشاداحمدارائیں نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں محمدشہبازشریف کی ذاتی دلچسپی سے بجلی کے بحران کو ختم کرنے کے لئے چائنا کے ساتھ گذشتہ ساڑھے تین سال (بقیہ نمبر5صفحہ12پر )

کے دوران اربوں ڈالر کے معاہدے ہوئے ہیں اورانشااللہ 2018تک ملک سے بجلی کی لوڈشیڈنگ کا مکمل خاتمہ ہوجائے گا ان خیالات کا اظہار انہوں نے رضوان ٹاؤن مجاہدکالونی میں بجلی کے نئے ٹرانس فارمر کی تنصیب کے بعد افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب کا اہتمام مسلم لیگ ن کی رہنما امیدوار کونسلر حاجن فوزیہ بیگم اور بزرگ مسلم لیگی چاچامحمداسلم کی طرف کیاگیا تھا افتتاحی تقریب میں نامزد چیئرمین بلدیہ بورے والا چوہدری محمدعاشق ارائیں،وائس چیئرمین حاجی افتخار احمدبھٹی،کونسلر زبلدیہ میاں ثنا اللہ رحمانی،محمدجمیل شاہد رحمانی،مسلم لیگی رہنما صغیراحمدرامے،سید اسدحسین شاہ،(اکاؤنٹنٹ واپڈا)چوہدری اصغرعلی سمیت دیگر نمائندہ شخصیات موجودتھیں چوہدری ارشاداحمدارائیں نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اب حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ اب ارکان پنجاب اسمبلی کی سفارشات پر بجلی کے چھوٹے چھوٹے منصوبے مکمل کئے جائیں گے حکومت تعلیم اور صحت پر خصوصی توجہ دے رہی ہے وزیراعلیٰ شہبازشریف کی ہدایت پر لوگوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے لئے اپریل2018تک ہرگاؤں میں واٹرفلٹریشن پلانٹ مہیا کیاجائے گا جس کا نظم و نسق5سال تک غیرملکی فرم چلائے گی انہوں نے مزید کہا کہ حکومت نے بورے والا شہر کے چاروں طرف نہر کے دونوں کناروں پر شہبازشریف منی بائی پاس کی تعمیر کے لئے75کروڑ کے فنڈز جاری کردئیے ہیں یہ بائی پاس 19کلومیٹر پر محیط ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ بورے والا میں ریسکیو1122کی عمارت اور تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال میں دل کا وارڈ مکمل ہوچکاہے جس کا افتتاح جلدہی وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف کریں گے مسلم لیگی رہنما چاچامحمداسلم نے خطاب کرتے ہوئے ارکان اسمبلی کو شہر میں مثال ترقیاتی کام کروانے پر مبارکبادپیش کی اور مطالبہ کیا کہ رضوان ٹاؤن کی مرکزی سڑک کو پختہ کرنے کے لئے فنڈز مخصوص کئے جائیں تقریبات کی میزبان حاجن فوزیہ کی طرف سے شرکا کے اعزاز میں ریفریشمنٹ کا بھی اہتمام کیاگیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر