نیب کے ہاتھوں مختلف ٹریڈ کمپنیوں کے مالکان کی گرفتار

نیب کے ہاتھوں مختلف ٹریڈ کمپنیوں کے مالکان کی گرفتار

پشاور( پاکستان نیوز)قومی احتساب بیورو خیبر پختونخوانے ایجوکیشنل ریسورسزپوائنٹ کے مالک محمد اشرف،حق نوازٹریڈرز،آکسن اکیڈمس اورقاری پبلشر،اقراء ٹریڈرزکے مالک قاری محمدافتخار،مش ٹریڈرزکے مالک محمداحسن اسلام اوربک پوائنٹ کے مالک نیازمحمد کوگرفتارکرلیا۔ ملزما ن کیخلاف عوام کی مسلسل شکایات پرتحقیقات کا آغاز کیا گیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق چاروں ملزمان ورکرز ویلفیئر بورڈ کے کنٹریکٹراورسپلائرزتھے ملزمان نے ناقص سازوسامان کی فراہمی کے ذریعے قومی خزانے کونقصان پہنچایا۔ملزمان ورکرزویلفیئربورڈکوڈائریز،رجسٹرز،ایکسرسائزبکس،ریزلٹ کارڈز،ٹیکس بک،کورس بکس کراکری، کھیل کے سازوسامان،سٹیشنری اشیاء،سپورٹس کٹ،پی وی سی پائپس،ٹیوب لائٹس،ویلڈنگ کاسازوسامان، مائیکرومیٹرز، فائبر آپٹک ٹول کٹس،مختلف مذہبی وتاریخی کتابیں سمیت دیگرایشاء حدمارکیٹ کئی گناسے زیادہ شرح پرفراہم کرتے تھے ملزمان ورکرزویلفیئربورڈکے چنداہلکاروں کی ملی بھگت سے مذکورہ سامان کے فراہمی کے ٹھیکے لیتے رہے ملزمان کوٹھیکے دینے میںPPRAکے قوائدوضوابطکونظراندازکیاگیاجس کے باعث قومی خزانے کونقصان پہنچا۔یہاں بات قابل ذکرہے کہ اس سکینڈل کے اہم مجرم سیکرٹری ورکرزویلفیئربورڈطارق اعوان کوقومی احتساب بیورونے WWB میں سکالرشپ فراڈ سے متعلق سکینڈل میں گرفتارکیاہے۔قومی احتساب بیوروخیبرپختونخواٹھیکیداروں کوٹھیکے فراہم کرنے کے حوالے سے کیس کی مزید چھان بین کررہی ہے جس میں اہم انکشافات متوقع ہیں۔ملزمان کی جسمانی ریمانڈحاصل کرنے کیلئے انہیں جلداحتساب عدالت کے سامنے پیش کیاجائیگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر