یورپی آٹو کمپنیاں پاکستان میں اسمبلنگ پلانٹ لگانے کیلئے خواہاں

یورپی آٹو کمپنیاں پاکستان میں اسمبلنگ پلانٹ لگانے کیلئے خواہاں
یورپی آٹو کمپنیاں پاکستان میں اسمبلنگ پلانٹ لگانے کیلئے خواہاں

  

اسلام آباد (اے پی پی) پاکستانی آٹومارکیٹ غیر ملکی سرمایہ کاری کیلئے زبردست مواقع پیش کرتی ہے، بینکوں کی طرف سے کاروں کے لیے قرضوں پر مارک اپ کی شرح میں کمی اور متوسط طبقے کی آمدنی میں اضافے اور حکومت کی طرف سے غریب طبقہ کو روزگار کیلئے ٹیکسیوں کی فراہمی کے نتیجے میں گاڑیوں کی پیداوار و فروخت میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے.

خیلج ٹائمز کے حوالے سے خبررساں ایجنسی ’اے پی پی ‘ نے لکھا کہ  گزشتہ سال کے دوران پاکستان میں کاروں کی تیاری اور فروخت میں19 فیصد اضافہ ہوا، رواں مالی سال اس میں مزید 10 فیصد اضافے کی توقع ہے ،اس صورتحال میں فرانس کی رینالٹ، جرمنی کی فاکس ویگن اور اٹلی کی فیاٹ سمیت کئی کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری اور سمبلنگ پلانٹ لگانے پر غور جاری رکھا ہوا ہے تاہم جاپانی، ہونڈا، سوزو کی اور ٹویوٹا، چین کی فااور جنوبی کورین کمپنیوں کی موجودگی میں نئی کمپنیوں کی مسابقت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

واضح رہے کہ مالی سال 2014-15 کے دوران بینکوں کی طرف سے کارفنانسنگ کی شرح 22 فیصدتھی جو سال 2015-16 میں بڑھ کر 30 فیصد ہو گئی۔

مزید : بزنس