وزیر اعظم نواز شریف کی منی لانڈرنگ کے شواہد موجود ہیں ،پاناما لیکس کے معاملے پر سپریم کورٹ جاﺅں گا :عمران خان

وزیر اعظم نواز شریف کی منی لانڈرنگ کے شواہد موجود ہیں ،پاناما لیکس کے معاملے ...
وزیر اعظم نواز شریف کی منی لانڈرنگ کے شواہد موجود ہیں ،پاناما لیکس کے معاملے پر سپریم کورٹ جاﺅں گا :عمران خان

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے پاناما لیکس کے معاملے پر وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا اعلان کردیا ۔ان کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے 1993کرپشن کا پیسہ باہر بھجوایا جس کے شواہد موجود ہیں ،سپریم کورٹ میں منی لانڈرنگ کے ثبوت پیش کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے ٹی او آر کو تسلیم نہ کیا تو پھر 3ستمبر سے گوجرانوالہ سے لاہورتک پاکستان مارچ کریں گے جس میں سارے ملک سے لوگ حصہ لیں گے ۔چیئر مین تحریک انصاف نے کہا کہ نریندر مودی نے انتہائی غیر ذمے دارانہ بیان دیا جس کے جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔

بنی گالا میں میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ہمارے پاس ثبوت موجود ہیں ،نواز شریف نے 1993میں منی لانڈ رنگ کر کے ساڑھے تین لاکھ ڈالر شیمروک کارپوریشن میں بھجوائے تھے اور پھر اسی سال مئے فیئر میں فلیٹ بھی خریدے جو آج اربوں روپے کے ہیں ،نواز شریف شیمروک کمپنی کے مالک ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم الیکشن کمیشن میں جا چکے ہیں،اب ان ثبوتوں کے ساتھ سپریم کورٹ جائیں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ آئندہ ہفتے جہلم اور گجرات میں جلسے کریں گے جس کے بعد 3ستمبر سے گوجرانوالہ سے لاہور تک پاکستان مارچ کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ اگر پاکستان مارچ کے لاہور پہنچنے پر بھی ٹی او آر کا معاملہ حل نہ ہواتو اگلے لائحہ عمل کا اعلان وہاں ہی کیا جائے گا۔

تین تاریخ کو گوجروانوالہ سے لاہو ر تک پاکستان مارچ کریں گے سارے پاکستان سے کہیں گے کے لاہور آئیں ،اگر تین تاریخ تک جواب نہ آیا گوجرانولہ سے لاہور تک مارچ ہو گی ۔لاہور میں جو فیصلہ ہو گا وہ لاہور میں بتائیں گے اس کے بعد کیا کرنے لگے ہیں ۔ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ میر ی مقبولیت میں چاہے جتنی بھی کمی آجائے لیکن پاناما لیکس کا پیچھا نہیں چھوڑوں گا کیو نکہ یہ مسئلہ ملک کو تباہی کی طرف لے کر جا رہا ہے ۔عمران خان کا کہنا تھاک ہر چیز کی جڑ کرپشن ہے ،اگر اس پر قابو نہیں پایا تو ملک کا کوئی مستقبل نہیں ،مجھے اپنی مقبولیت کے خاتمے سے کوئی فرق نہیں پڑتا ۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے حوالے سے بھارتی وزیر اعظم نے انتہائی غیر ذمہ دارانہ بیان دیا جس کی مذمت کرتے ہیں ،اس بیان پر سرتاج عزیز کے بجائے وزیر اعظم کو مذمت کرنی چاہیے ۔ان کاکہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے ،اس بربریت پر بین الاقوامی برادری کی خاموشی افسوس ناک ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں