’انٹرنیٹ پر فحش مواد بڑھنے کے ساتھ ساتھ نوجوانوں میں صحت کے اس ایک مسئلے کا بھی اضافہ ہورہا ہے‘ انتہائی پریشان کن حقیقت منظر عام پر

’انٹرنیٹ پر فحش مواد بڑھنے کے ساتھ ساتھ نوجوانوں میں صحت کے اس ایک مسئلے کا ...
’انٹرنیٹ پر فحش مواد بڑھنے کے ساتھ ساتھ نوجوانوں میں صحت کے اس ایک مسئلے کا بھی اضافہ ہورہا ہے‘ انتہائی پریشان کن حقیقت منظر عام پر

  

لندن (نیوز ڈیسک) ایک وقت تھا کہ مردانہ کمزوری بڑی عمر کے مردوں کا مسئلہ سمجھا جاتا تھا لیکن ڈاکٹر کہتے ہیں کہ اب یہ عمر رسیدہ افراد سے کہیں زیادہ نوجوانوں کا مسئلہ بن گیا ہے، اور اس تشویشناک تبدیلی کی صرف ایک وجہ ہے، انٹرنیٹ پر وافر دستیاب فحش فلمیں۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق فحش فلموں کے باعث نوجوانوں میں مردانہ کمزوری کا مسئلہ اس قدر بڑھ چکا ہے کہ طبی ماہرین بھی حیران و پریشان ہیں۔ نوٹنگھم یونیورسٹی ہسپتال سے تعلق رکھنے والی ڈاکٹر اینجلا گریگری نے برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے پچھلے پانچ سال کے دوران مردانہ کمزوری کا مسئلہ لے کر آنے والے نوجوانوں کی تعداد میں حیرت انگیز اضافہ دیکھا ہے۔ وہ کہتی ہیں کہ ایسے نوجوانوں سے ان کا پہلا سوال یہ ہوتا ہے کہ وہ فحش فلموں کے عادی تو نہیں ہیں۔

ڈاکٹر اینجلا کا کہنا ہے کہ انٹرنیٹ، ٹیبلٹ اور موبائل فون نے فحش مواد تک رسائی اس قدر آسان بنادی ہے کہ سکول کے بچے بھی اس لت میں مبتلا ہوچکے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جب نوجوان فحش فلموں کے عادی ہوجاتے ہیں تو ان کا دماغ فطری جنسی تعلق کی طرف مائل نہیں ہوتا۔ ان فلموں کے غیر حقیقی مناظر کی وجہ سے دماغ بے حس ہوجاتا ہے اور شریک حیات کے ساتھ ازدواجی تعلق استوار کرنے میں بے پناہ نفسیاتی مشکلات پیش آتی ہیں، جو بعدازاں جسمانی عارضے کی صورت اختیار لیتی ہیں۔

قیامت کی نشانی ماں اور بیٹے کو مکروہ فعل کرنے کے بعد بھی چین نہیں آیا تو ایسا کام کرنے کی ٹھان لی کہ سن کرہر انسان شرما جائے

سائنسی جریدے بیہیویئر سائنسز جنرل میں شائع ہونے والی ایک تازہ تحقیق میں بھی اس بات کی تصدیق کی جاچکی ہے کہ فحش مواد کی عادت نشے کی طرح لگ جاتی ہے، جس کے نتیجے میں مردانہ کمزوری کا مسئلہ عام ہورہا ہے۔ اسی طرح سائنسی جریدے جرنل آف سیکچوئل میڈیسن میں شائع ہونے والی تحقیق میں انکشاف کیا گیا ہے کہ مردانہ کمزوری کے شکار تقریباً 25 فیصد افراد کی عمر 40 سال سے کم ہے۔

ڈاکٹر اینجلا کا کہنا ہے کہ اس مسئلے کا علاج صرف یہی ہے کہ فحش مواد سے مکمل اجتناب کیا جائے۔ انہوں نے ایک نوجوان مریض کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ اس کی شدید مردانہ کمزوری کے علاج کے لئے انہوں نے اسے تین ماہ کے لئے فحش مواد سے مکمل پرہیز کی ہدایت کی، اور تین ماہ مکمل ہونے سے پہلے ہی اس کی مردانہ صلاحیت بھرپور طاقت کے ساتھ واپس آ چکی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس