اٹک، سابق وزیر داخلہ پنجاب کر نل شجاع خانزادہ کی پہلی برسی کے موقع پر مختلف مقامات پر دعائیہ تقریبات کا انعقاد

اٹک، سابق وزیر داخلہ پنجاب کر نل شجاع خانزادہ کی پہلی برسی کے موقع پر مختلف ...
اٹک، سابق وزیر داخلہ پنجاب کر نل شجاع خانزادہ کی پہلی برسی کے موقع پر مختلف مقامات پر دعائیہ تقریبات کا انعقاد

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اٹک (نیوز ڈیسک) سابق وزیر داخلہ پنجاب کر نل شجاع خانزادہ کی پہلی برسی کے موقع پر مختلف مقامات پر دعائیہ تقریبات منعقد ہو ئیں، یا د رہے کہ 16اگست 2015ء کو کر نلشجا ع خانزادہ اپنے گھر سے ڈیرے پر آئے تو دن گیا رہ بجے کے قریب دہشت گردوں نے یکے بعد دیگر سے دو خودکش دھماکے کئے، جس میں شجاع خانزاہ ، ڈی ایس پی شوکت شاہ ، سب انجینئر نوید مشتاق سمیت 23افراد شہید ہوگئے تھے.

کرنل شجا ع خانزادہ کا تعلق اٹک کی تحصیل حضرو کے گاؤں شادی خان میں گزشتہ ڈیرھ صدی سے سیاست پر چھائے ہوئے یوسف زئی قبیلے کی شاخ خانزادہ سے تھا ،وہ 28اگست 1943ء کو پیدا ہوئے ،پڑھائی کا دورانیہ کے پی کے میں گزارا ، اسلامیہ کالج پشاور سے 1966میں گریجویشن کے بعد 1967میں آرمی میں کمیشن حاصل کیاپاک آرمی، آئی ایس آئی اور سفارت کار طور پر وطن عزیز، افغانستان اور امریکہ میں متعدد عہدوں پر خدمات سرانجام دیں ، خدمات کے اعتراف میں 1988میں تمغہ بسالت سے نوازا گیا۔کرنل شجاع خانزادہ نے سیاست کا آغازتحصیل حضرو سے کیا ،2002ء میں وہ مسلم لیگ (ق )کے ٹکٹ پر ایم پی اے منتخب ہوئے اور بطور صوبائی وزیر خدمات سرانجام دیں،2008ء میں آزاد حیثیت سے منتخب ہو کر مسلم لیگ (ن ) میں شمولیت اختیار کی ،2013کے عام انتخابات میں منتخب ہو کر ہیٹ ٹرک مکمل کی ،انہیں محکمہ ماحولیات کی وزارت ملی،بعد میں اکتوبر 2014کو انہیں وزارت داخلہ کی بھاری ذمہ داریاں بھی سونپ دی گئیں،انہیں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن میں مسلسل کامیابیوں پر خفیہ اداروں کی جانب سے با رہا خود کش حملہ کی اطلاعات فراہم کی گئیں تاہم وہ اپنے علاقہ کی روایات کے خلاف پروٹوکول لینا مناسب نہ سمجھتے تھے۔

نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد اور دہشت گردی کی اس جنگ کی کمانڈ خود صوبائی وزیر داخلہ کرنل(ر) شجاع خانزادہ کررہے تھے،وہ ایک حقیقی جانثار ، محب وطن غازی رہے ہیں ، وہ فوج سے ریٹائرمنٹ کے باوجود پاک فوج اور حکومت کے شانہ بشانہ دہشت گروں کے خلاف صف آراء تھے، پاکستان کی ازلی دشمن ’’را‘‘ کو بے نقاب اور مملکت خدادا میں اس کی ذیلی شاخوں کی نشاندہی انہوں نے جس جرات و بے باکی کے ساتھ کیا وہ انہی کا خاصا تھا یہی وجہ ہے کہ ان ’’را یافتہ‘‘ تنظیموں نے انہیں ہٹ لسٹ پر رکھا اور پھرملک کے ازلی دشمنوں نے 16اگست کو پاکستان کی تاریخ کے ایسے بدترین دن میں تبدیل کر ڈالا جس کی مثال ملنا ناممکن ہے، پاکستان ایک سچے محافظ، کھرے سیاستدان کرنل شجاع خانزادہ سے محروم ہو گیا۔

مزید : اٹک