جوہری معاہدے عالمی طاقتوں کے سامنے سرجھکانے کی علامت نہیں، صدر روحانی

جوہری معاہدے عالمی طاقتوں کے سامنے سرجھکانے کی علامت نہیں، صدر روحانی

  



تہران(آن لائن) ایران کے صدر حس روحا نی نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے نہ تو دنیا کے لئے کوئی خطرہ ہے اور نہ ہی یہ عالمی قوتوں کے سامنے سر جھکانے کی نشانی ہے ۔ بلکہ یہ ایسا سمجھوتہ ہے جس میں تمام فریق فاتح ہیں اور اس سے دنیا کے ساتھ باہمی اعتماد اور تعلقات کی بحالی کے لئے راہ ہموار ہوگئی.۔ ملکی میڈیا کے مطابق ایرانی مجلس (پارلیمنٹ) کے خصوصی اجلاس میں اپنی نئی کابینہ کے لئے نامزد کئے گئے وزرا کا دفاع کی کرتے ہوے حسن روحانی نے کہا کہ قوم کے حقوق کی پاسداری ہماری ذمہ داری ہے.صدر روحانی نے کہا کہ اس بات سے قطع نظر کہ کس نے ہمیں ووٹ دیا یا نہ دیا ہم ملک کی سلامتی اور ترقی کے لئے مل کر کام کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی خودمختاری، امن، سلامتی اور ترقی ان کی حکومت کی چارسالہ پالیسی ہے لہذا اپنے اہداف کے حصول کے لئے ملک کے تمام ماہرین، عمائدین، رہنماوں اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ہم وطنوں کی خدمات اور ان کے تعاون حاصل کریں گے.ایران جوہری معاہدے کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ یہ معاہدہ نہ تو کوئی دنیا کے لئے خطرہ ہے اور نہ ہی عالمی قوتوں کے سامنے سرجھکانے کی علامت ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی قوم کی عزت کی پاسداری کی بنیاد پر دنیا کے ساتھ تعلقات کی بحالی نئی حکومت کی خارجہ پالیسی کا اہم جز ہے.صدر روحانی نے کہا کہ جو لوگ اب بھی پابندیوں اور دھمکیوں کی زبان استعمال کرتے ہیں وہ اپنے وہم و خیال کے شکار ہیں۔

مزید : عالمی منظر


loading...