سعودی عرب: جنرل اتھارٹی برائے ملٹری انڈسٹریز کے قیام کی منظوری

سعودی عرب: جنرل اتھارٹی برائے ملٹری انڈسٹریز کے قیام کی منظوری

  



جدہ(آن لائن)سعودی عرب کی کابینہ نے جنرل اتھارٹی برائے فوجی صنعتیں (ملٹری انڈسٹریز) کے قیام کی منظوری دے دی ہے۔یہ مالی اور انتظامی طور پر ایک آزاد ادارہ ہوگا۔سعودی عرب کی وزارتی کونسل کا ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے زیر صدارت اجلاس ہوا۔کونسل نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ اتھارٹی کا ایک بورڈ آف ڈائریکٹرز ہوگا۔اس کے سربراہ نائب وزیراعظم ہوں گے اور وزیر توانائی ، صنعت اور قدرتی وسائل کے وزیر ،وزیرخزانہ، وزیر تجارت اور سرمایہ کاری اور سعودی ملٹری انڈسٹریز کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چئیرمین اس کے ارکان ہوں گے۔اس اتھارٹی کے قیام کا مقصد سعودی مملکت میں فوجی صنعت کو منظم بنانا۔

اس کی ترقی اور اس کی کارکردگی کو جانچنا اور اس کے مقاصد کے حصول کے لیے ضروری اقدامات کرنا ہے۔قبل ازیں سعودی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ ( پی آئی ایف ) نے بدھ کو اسلحہ سازی کے لیے ایک قومی سرکاری کمپنی کے قیام کا اعلان کیا تھا۔اس سے سعودی مملکت میں ملازمتوں کے ہزاروں نئے مواقع پیدا ہوں گے۔یہ نئی کمپنی سعودی عرب ملٹری انڈسٹریز (سامی) کے نام سے قائم کی جارہی ہے اور یہ مملکت کے وژن 2030ء4 کا حصہ ہے۔یہ وڑن سعودی عرب کا تیل کی معیشت پر انحصار بتدریج کم کرنے اور اس کے آمدن کے ذرائع کو متنوع بنانے کے لیے وضع کیا گیا ہے۔پی آئی ایف کے بیان کے مطابق ’’سامی میں ابتدائی طور پر اسلحہ کی مصنوعات تیار کی جائیں گی اور وہ چار کاروباری یونٹوں ائیر سسٹمز ، لینڈ سسٹمز ، ہتھیاروں اور میزائلوں اور دفاعی الیکٹرانکس کے لیے خدمات مہیا کرے گی‘‘۔

مزید : عالمی منظر