ڈاکٹر تنظیموں اور سوشل میڈیا پر ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال اور مذاکرات کی کامیابی کو شدید تنقید کا سامنا

ڈاکٹر تنظیموں اور سوشل میڈیا پر ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال اور مذاکرات کی کامیابی ...

  



ملتان(وقائع نگار)ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی جانب سے ہڑتال کے معاملے پر مذاکرات کی کامیابی کو مخالف ڈاکٹروں تنظیموں اور سوشل میڈیا پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔وائی (بقیہ نمبر25صفحہ12پر )

ڈی اے مخالف ڈاکٹرز تنظیموں کا کہنا ہے کہ’’مک مکا‘‘کو کامیابی کا نام دیا جارہا ہے،وائی ڈی اے کے مطالبات تھے کہ سیکرٹری صحت نجم شاہ کو عہدے سے ہٹایا جائے۔ان پر کرپشن کے الزامات لگائے گئے ہیں۔ہڑتال کے دوران گو نجم گو کا نعرہ لگایا جاتا رہا اور کہا گیا ہے کہ وہ انجینئر ہیں سیکرٹری صحت کا عہدہ کسی ڈاکٹر کو دیا جائے۔ایک بستر ایک مریض،نئے ہسپتال کے قیام سنٹرل انڈکشن پالیسی کے مطالبات بھی سرفہرست تھے اس طرح ہڑتال سے پہلے وائی ڈی اے کے مطالبات پرغور کیلئے دو وائس چانسلر اور ایک پروفیسر پر مشتمل کمیٹی تشکیل دی گئی ہے وائی ڈی اے نے مسترد کردیا اور اب اسی کمیٹی سے مذاکرات کے بعد مطالبات کے جائزہ اور یقین دہانیاں حاصل کرنے کے بعد اسے کامیابی کا نام دیا جارہا ہے،مخالف ڈاکٹروں کی تنظیم کا کہنا ہے کہ یہی لولی پاپ 2016ء میں وائی ڈی اے کے احتجاج کے بعد دیا گیا تھا،گو نجم گو کا نعرہ لگانے والے اور انہیں شعبہ صحت کی تباہی کا ذمہ دار قرار دینے والی وائی ڈی اے پنجاب کی قیادت نے تحریری معاہدے میں سیکرٹری صحت نجم شاہ کی اس شعبہ میں خدمات کا اعتراف کیا ہے۔

تنقید

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...