شیرنی ہلاکت ، چڑیا گھر میں ہسپتال بنانے کا فیصلہ

شیرنی ہلاکت ، چڑیا گھر میں ہسپتال بنانے کا فیصلہ

  



 لاہور( لیڈی رپورٹر) لاہور چڑیاگھر میں ڈی ہائیڈریشن اور گیسٹرو کی بیماری میں مبتلا شیرکی بچی "اینجلا"چل بسی۔چڑیاگھر کے ترجمان نے کہا ہے کہ شیر کی بچی کی عمر 5ماہ تھی اور علالت کے باعث ایک ہفتے سے کھانا پینا چھوڑ چکی تھی اسے دوران علاج ڈرپ کے ذریعے خوراک دی جاری رہی تھی ۔ علاج کیلئے سفاری زو لاہور کے ڈاکٹر رضوان کی سربراہی میں ڈاکٹر وردہ اور ڈاکٹر مدیحہ پر مشتمل میڈیکل ٹیم کی سر تو ڑ کوششوں کے باوجود بچہ جانبر نہ ہوسکا ۔انہوں نے مزید بتایا کہ یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز کے شعبہ پیٹ (PET) کے سربراہ ڈاکٹر عاصم خالد بھی بچے کے علاج اور اس کی جان بچانے کی کوششوں میں شامل رہے ۔

لاہور( لیڈی رپورٹر) ڈائریکٹرلاہور چڑیا گھر حسن علی سکھیرا نے کہا ہے کہ جانوروں کو طبی سہولیات کی فراہمی کیلئے لاہور چڑیاگھر میں جدید ہسپتال قائم کرنے کے منصوبے کو حتمی شکل دیدی گئی ہے اور آئندہ زو مینجمنٹ کمیٹی کے اجلاس میں اس کی منظوری حاصل کرتے ہی اس پر کام شروع کردیا جائیگا ۔انہوں نے یہ بات چڑیا گھر میں اپنے دفتر کے کمیٹی روم میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو ایک بریفنگ کے دوران کہی۔ انہوں نے بتایا کہ نئے قائم کئے جانے والے اس ہسپتال میں پتھالوجیکل اور ہیما ٹالوجیکل ٹیسٹس کی لیبارٹری ، ٹریٹمنٹ روم اور آئی سی یو قائم کئے جائینگے اور سینئر ویٹرنری آفیسر اس کا انچارج ہوگا ۔ڈائریکٹر چڑیاگھر نے کہا کہ روزانہ کی بنیاد پر اینیمل ہیلتھ چیکنگ اور ٹریٹمنٹ ڈیٹا کو آن لائن کرنے کیلئے ویب پورٹل بنالیا گیا ہے اور تجرباتی بنیادوں پر اس کو چیک کیا جارہا جسے جلد ہی فعال کردیا جائیگا ۔ ان ڈیٹا بیسز کے باعث تمام جانوروں اور پرندوں کا ہرقسم کا ریکارڈ آن لائن کردیا جائے گا او ر نا صرف چڑیا گھرانتظامیہ اس ریکارڈکو کسی بھی وقت چیک کر سکے گی بلکہ صوبہ بھر کے چڑیا گھروں اور وائلڈ لائف پارکس کی انتظامیہ بھی ان تجربات سے مستفید ہو سکے گی ۔حسن علی سکھیرا نے کہا کہ چڑیاگھر میں موجود افریقی شیرنیوں کو کراس بریڈ کروانے کیلئے نئے شیر لانے کیلئے بھی سنجیدگی سے غور کیا جارہاہے۔ ڈائریکٹر چڑیاگھر نے کہا کہ چڑیاگھر کے تمام جانوروں کی ٹیگنگ کی جائے گی اور ان کے جنیاتی تجزیہ کی بنیاد پر ان کی افزائش نسل کی منصوبہ بندی کی جائے گی ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...