ون ویلنگ سے ہلاکتوں کی ذمہ داری ناقص قانون سازی اور متعلقہ حکام کی نااہلی ہے ، والدین اور عزیز اوقارب

ون ویلنگ سے ہلاکتوں کی ذمہ داری ناقص قانون سازی اور متعلقہ حکام کی نااہلی ہے ...

  



لاہور (لیاقت کھرل)جشن آزادی پر ون ویلنگ کی نذر ہو کر جاں بحق ہونے والے نوجوانوں کے والدین اور عزیز و اقارب نے اپنے بچوں کی ہلاکت کا ذمہ دار ون ویلنگ کی ناقص قانون سازی ، عملد رآمد کے فقدان اور متعلقہ حکام کی نا اہلی اور غفلت کو قرار دیا اور کہا ہے کہ ہمارے بچے ناقص حکمت عملی کے باعث موت کی آغوش میں گئے ہیں۔ون ویلنگ کے خونی کھیل پرمتعلقہ ایس ایچ او اور ڈی ایس پی کو معطل کر کے مقدمہ درج کیا جائے تو کوئی ویلر سڑک پر نہیں آئے گا، متعلقہ ٹریفک فسر کو بھی ذمہ دار ٹھہرایا جانے سے ون ویلنگ کاخونی کھیل رک سکے گا اوربے گناہ جانیں ضائع نہیں ہونگی۔ ان خیالات کا اظہار محمود بوٹی باغبانپورہ کے رہائشی 17سالہ یاسین اور 16سالہ دہشام اور دیگر کے لواحقین نے روزنامہ ’’پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر 17 سالہ یاسین کے والد رشید احمد نے کہا کہ حکومت نے ون ویلنگ کے خلاف قانون تو بنا رکھا ہے، لیکن اس پر عملدرآمد نہ ہونے سے ون ویلنگ کا رجحان بڑھ رہا ہے کسی بھی تہوار یا چھٹی کے روز جان لیوا کھیل پتنگ بازی کے بعد ون ویلنگ کا کھیل شروع ہو جاتا ہے۔ والدہ کنیز ہ بی بی نے کہا کہ اپنے 17 سالہ بیٹے یاسین کی تصویر دل سے لگا کر تسلی دے رہی ہوں،لیکن تسلی نہیں ہورہی ہے۔ نوجوان یاسین کے تایا اسلم، پھوپھا اکبر، چچا احسان اور خالہ نرگس بی بی نے کہا کہ ان کے بچوں کی ہلاکت کی ذمہ دار حکومت اور متعلقہ پولیس ہے۔ اس موقع پر نوجوان دہشام کے والد کاشف مسیح، بھائی پرویز مسیح اور رشتے دار اکبر مسیح نے کہا کہ حکومت نے قانون بنا رکھا ہے۔ لیکن اس پر عملدرآمد نہیں ہو رہا ہے۔ ون ویلنگ کے حادثے میں متعلقہ ایس ایچ او اور ڈی ایس پی کے خلاف مقدمہ درج ہونا چاہئے، اعلیٰ حکام ایک واقعہ پر متعلقہ ایس ایچ اور ڈی ایس پی کو معطل کریں گے اور مقدمہ درج کریں گے تو ایک ویلر بھی سڑک پرنظرنہیں آئے گا۔اس حوالے سے عام شہریوں احسان علی، داؤد احمد، مدثر علی اور محمد شریف سمیت افتخار شاہ نے کہا حکومت نے ون ویلنگ کے خلاف اخبارات میں بڑے بڑے اشتہار دئے اور پولیس نے محض چند بڑی سڑکوں پر ناکہ بندی کی جبکہ لاہور کے گنجان علاقوں کی سڑکوں پر ناکہ بندی نہ کی گئی اور پولیس کے نظر نہ آنے کی وجہ سے ون ویلنگ کا خونی کھیل جاری ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ جشن آزادی کے موقع پر ہونے والے ون ویلنگ اور حادثات کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

مزید : علاقائی


loading...