ریلی پر سرکاری وسائل خرچ کرنے کا الزام،شہباز شریف کی نااہلی کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر

ریلی پر سرکاری وسائل خرچ کرنے کا الزام،شہباز شریف کی نااہلی کیلئے لاہور ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی) سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کی ریلی پر سرکاری وسائل خرچ کرنے کے الزام میں وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی نااہلی کی کے لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی، یہ درخواست شاور خلجی ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر کی گئی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سپریم کورٹ نے میاں محمدنواز شریف کو نااہل قرار دیا جس کے بعد انہوں نے اسلام آباد سے لاہور تک ریلی نکالی اس ریلی پر پنجاب حکومت نے اربوں روپے سرکاری خزانے سے خرچ کئے حالانکہ قانون کے مطابق ایک نااہل وزیراعظم کی عدلیہ مخالف ریلی کے لئے سرکاری وسائل استعمال نہیں کئے جا سکتے، قومی خزانہ عوام کی امانت ہے جس میں میاں شہباز شریف خیانت کے مرتکب ہوئے ،اب وہ آرٹیکل 62اور63پر پورا نہیں اترتے ،اس لئے انھیں نااہل قرار دے کر عہدے سے ہٹانے کے احکامات جاری کئے جائیں۔

تہمینہ جنجوعہ اور سہیل محمود کی تقرریوں کیخلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

نئی سیکریٹری خارجہ اور بھارت میں تعینات سفارت کارجونیئر ترین افسران ہیں،درخواستگزار

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ اور بھارت میں تعینات ہونے والے نئے سفارتکار سہیل محمود کی تقرریوں کے خلاف دائر درخواست کو ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا۔مسٹر جسٹس شاہد وحید نے شہری محمود اختر کی درخواست پر درخواست کے قابل سماعت ہونے سے متعلق کے محفوظ فیصلہ سنایا ،درخواست میں سابق وزیراعظم میاں محمدنواز شریف اور وفاقی حکومت کو فریق بنایا گیا تھا، درخواست میں کہا گیا تھا کہ نئی سیکریٹری خارجہ اور بھارت میں تعینات ہونے والے سفارت کارجونیئر ترین افسران ہیں جبکہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے تحت جونیئر افسروں کا اہم اور حساس عہدوں پر تقرر نہیں کیا جا سکتا،ان افراد کی تقرریوں کی وجہ سے بھارت میں پاکستانی سفارت کار عبد الباسط نے ریٹائرمنٹ لے لی انتہائی اہم عہدوں پر جونیئر افسران کی تعیناتی خلاف قانون ہے اور اس سے ناقص خارجہ پالیسی ثابت ہوتی ہے ،انہیں عہدوں سے ہٹایا جائے، عدالت نے ابتدائی سماعت کے بعد درخواست مسترد کر دی۔

قائد اعظم سولر پاور پلانٹ کی ممکنہ نجکاری کیخلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے قائد اعظم سولر پاور پلانٹ کی ممکنہ نجکاری کے خلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کر دی۔جسٹس شاہد وحید نے محمود اختر کی درخواست پر سماعت کی. درخواست میں کہا گیا کہ قائد اعظم سولر پاور پلانٹ کی نجکاری سے سرکاری خزانے کو نقصان ہوگا، حکومت کو نجکاری کی بجائے پلانٹ کے شیئرز فروخت کرنے چاہئیں، پلانٹ کی نجکاری سے حکومت عوام کا پیسہ ضائع کرے گی ، درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ حکومت کو قائد اعظم پاور پلانٹ کی نجکاری سے روکا جائے۔

انسٹی ٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ سائنسز پنجاب میں سینئرپروفیسرز کی عدم تعیناتیوں کیخلاف دائر ناقابل سماعت قرار

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے انسٹی ٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ سائنسز پنجاب میں سینئرپروفیسرز کی عدم تعیناتیوں کے خلاف دائر ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کر دی۔جسٹس شاہد وحید نے مقامی شہری محمود اختر نقوی کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت کی درخواسگزار نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ صحت اور اس کے مسائل سے نمٹنااور طبی تحقیقات کو فروغ دینا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہی نہیں۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ حکومتی غفلت کے نتیجے میں ایشیا کا معروف طبی تربیتی ادارہ تنزلی کا شکار ہو چکاہے جبکہ انسٹی ٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ سائنسز پنجاب میں پروفیسرز کی کمی کے سبب پوسٹ گریجوائٹ کورسز کے ساتھ الائیڈ سائنسز کورسز بھی متاثر ہو رہے ہیں، درخواست گزار نے نشاندہی کی کہ پنجاب کے سرکاری ہسپتالوں میں تربیت یافتہ عملے کی کمی کو پورا کرنے کے لئے انسٹی ٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ سائنسز پنجاب میں پروفیسرز کی خالی اسامیاں جلد پر کرنے کے احکامات صادر کئے جائیں۔

نجی پاور کمپنیوں کو قومی خزانے سے 342 ارب روپے دینے کیخلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے نجی پاور کمپنیوں کو قومی خزانے سے 342 ارب روپے دینے کے خلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کر دی۔ آئینی درخواست شہری سید محمود اختر نقوی کی جانب سے دائر کی گئی تھی ،درخواست میں وزارت پانی و بجلی سمیت چیف سیکرٹری پنجاب اور دیگر کو فریق بنایا گیا تھا،درخواست گزار نے عدالت میں موقف اختیار کیا گیا کہ نجی پاور کمپنیوں کو گردشی قرضوں کی مد میں 342 ارب روپے پری آڈٹ سے پہلے ادا کئے گئے،لیٹ ادائیگی کی مدمیں 31 ارب روپے کی اضافی رقم بھی قومی خزانے سے ادا کی گئی، نجی پاور کمپنیوں کویہ رقم ان منصوبوں کے لئے دی گئی جو کہ سالہا سال سے خراب پڑے ہیں، درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت نجی کمپنیوں کو سرکلر ڈیٹ کی مد میں 342 ارب ادائیگی کی مکمل اور تفصیلی رپورٹ طلب کرے اور اس کے ساتھ ساتھ عدالت قومی خزانے کو نقصان پہنچانے والے سرکاری و غیر سرکاری شخصیات کے خلاف کاروائی کا حکم صادر کرے۔

ہیپاٹائٹس کے 90ہزار مریضوں کو ادویات کی عدم فراہمی کیخلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور پائیکورٹ نے پنجاب حکومت کی جانب ہیپاٹائٹس کے 90ہزار مریضوں کو ادویات کی عدم فراہمی کے خلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کر دی۔جسٹس شاہد وحید نے شہری محمود اختر نقوی کی دائر درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کر دی، درخواست گزرا نے عدالت کوبتایا کہ حکومت پنجاب نے گزشتہ سال 90 ہزار ہیپاٹائٹس کے مریضوں کو گھر تک ادویات فراہم کرنے کا کہا مگر ابھی تک کسی بھی مریض کو ادویات فراہم نہیں کی جا سکیں ،درخواست گزار نے نشاندہی کی کہ 90ہزار لوگوں کی زندگیاں داؤ پر لگ گئی ہیں جس کے باعث جگر کا عارضہ بڑھ رہا ہے ،درخواست گزار نے عدالت کو آگاہ کیا کہ 40 ہزار مریضوں کی ادویات کی ڈرگ ٹیسٹنگ بھی مکمل نہیں کی گئی جبکہ 90 کڑوڑ سے خریدی گئی ادویات گودام کی زینت بنی ہوئی ہیں۔ عدالت سے استدعا کی گئی کہ عدالت ہیپاٹائٹس کے مریضوں کو ادویات کی فوری فراہمی کا حکم دے۔

مزید : علاقائی


loading...