بھارتی یوم آزادی پر مقبوضہ اور آزاد کشمیر سمیت دنیا بھر میں کشمیریوں کا یوم سیاہ، حریت رہنماؤں کی اپیل مکمل ہڑتال

بھارتی یوم آزادی پر مقبوضہ اور آزاد کشمیر سمیت دنیا بھر میں کشمیریوں کا یوم ...

  



سرینگر، مظفر آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) بھارت کے جشن آزادی کے موقع پر مقبوضہ اور آزاد کشمیر سمیت دنیا بھر میں مقیم کشمیریوں نے یوم سیاہ منایا جبکہ مقبوضہ وادی میں کرفیو کا سماں رہا۔کٹھ پتلی حکومت کی جانب سے بھارت کے جشن آزادی کے سلسلے میں سرینگر کے بخشی اسٹیڈیم میں مرکزی تقریب کا انعقاد کیا گیاتاہم تمام راستوں کو سیل کردیا گیاتھا، نگرانی کیلئے سی سی ٹی وی کیمرے بھی نصب کئے گئے ۔حریت قیادت کی کال پر وادی بھر میں یوم سیاہ منایا گیااور اس موقع وادی کے 10کے 10اضلاع سمیت جموں کے مسلم اکثریتی علاقوں میں مکمل ہڑتال رہی ،احتجاجی ریلیاں نکا لی گئیں جبکہ قابض فورسز نے وادی میں انٹرنیٹ سروس پھر معطل کردی اور حریت رہنما یاسین ملک کو حراست میں لے لیا،حریت رہنما سید علی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق اور یاسین ملک کا سرینگر اور دیگر علاقوں میں بھارتی فورسز کی جانب سے کرفیو لگانے کی شدید مذمت کر تے ہو ئے کہنا تھا وادی میں کرفیو، بلاجواز پابندیاں اور رکاوٹیں کھڑی کرنے سے کشمیری عوام کے پرامن احتجاج کو روکا نہیں جاسکتا، جبکہ مودی کے کشمیر کے حوالے سے بیان کا حریت رہنما میرواعظ عمر فاروق نے خیر مقدم کرتے ہوئے کہا انسانیت اور انصاف پر مبنی سوچ ہی مذ ا کرات کیلئے ماحول سازی کرسکتی ہے۔منگل کے روز وادی بھر میں مظاہروں کو روکنے کیلئے سرینگر سمیت بیشتر علاقوں میں سخت ناکہ بندی کی گئی اور لوگوں کی آمدورفت پر پابندی عائد رہی،سات گھنٹوں تک انٹرنیٹ اور فون رابطوں پر بھی پابندی تھی،اس دوران کپوارہ کے لنگیٹ حلقے سے منتخب رکن اسمبلی انجنیئر رشید نے بخشی سٹیڈیم میں سیاہ پرچم لہرانے کی کوشش کی جسے پولیس نے ناکام بنا دیا،انجینئر رشید واحد ہند نواز لیڈر ہیں جو ایوان اس سے باہر رائے شماری کا مطالبہ کرتے چلے آ رہے ہیں جبکہ غاصب فورسز نے احتجاجی مظاہرے روکنے کیلئے بڑے پیمانے پر کریک ڈاؤن کرتے ہوئے بیسیوں افراد کی پکڑ دھکڑ کی، متعدد علاقے محاصرے میں لے لئے اور جگہ جگہ چھاپے مارے گئے، حریت رہنما یاسین ملک کو سرینگر سے حراست میں لیکر پولیس سٹیشن بند کر دیا، یاسین ملک کو شہید ہونیوالے حریت کمانڈر محمد یاسین ایتوکی نمازجنازہ میں شرکت کیلئے نو گام جاتے ہوئے گرفتار کر لیا گیا۔ علاوہ ازیں بھارتی فوج کیساتھ جھڑپ میں شہید ہونیوالے حزب المجاہدین کے آپریشنل کمانڈر محمد یاسین ایتو المعروف محمود غزنوی کی نمازجنازہ میں ایک لاکھ کے قریب افراد نے شرکت کی، اس موقع پر آزادی اور پاکستان کے حق میں جبکہ بھارت کیخلاف زبردست نعرے بازی کی گئی۔واضح رہے 14اگست کو مقبوضہ کشمیرمیں پاکستان کا یوم آزادی بڑے جوش وخروش سے منایاگیا، لوگوں نے اپنی جان پرکھیل کر جگہ جگہ سبز ہلالی پرچم لہرائے۔ آز ا د ی کے متوالے ہاتھوں میں پاکستانی پرچم تھامے سڑکوں پر نکل آئے اور پاکستان و آزادی کے حق میں جبکہ بھارت کیخلاف زوردار نعرے لگائے، مختلف تقر یبات میں پاکستان کا قومی ترانہ پڑھاگیا جبکہ پاکستان کی سلامتی و بقا اور مقبوضہ کشمیرکی آزادی کیلئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔

یوم سیاہ

مزید : صفحہ اول


loading...