فسادیوں کو پارٹی سے فارغ کر دیا

فسادیوں کو پارٹی سے فارغ کر دیا
 فسادیوں کو پارٹی سے فارغ کر دیا

  



اسلام آباد(صباح نیوز) آل پاکستان مسلم لیگ کے چیئرمین پرویز مشرف نے کہا ہے کہ پارٹی میں انتشار پھیلانے اور ان کا ساتھ دینے والوں کی بنیادی رکنیت ختم کی جاتی ہے۔فسادی آل پاکستان مسلم لیگ کے کامیاب جلسوں پر حیران ہیں،’’ کھیلیں گے نہ کھلنے دیں گے‘‘ کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔فسادی پارٹی صدر تو کیا پارٹی رکن بھی نہیں ہیں۔پارٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محمدامجد تھے اور وہی رہیں گے،پارٹی کے مرکزی دفتر سمیت صوبائی دفاتر بھی وہی ہیں جو پہلے تھے.قوم کو یوم آزادی مبارک ہو،خداکرے پاکستان ہمیشہ سلامت رہے۔منگل کو آل پاکستان مسلم لیگ کے چیئرمین سید پرویز مشرف نے پارٹی کارکنان کے نام اپنے ایک ویڈیو پیغام میں اے پی ایم ایل کے ملیر کراچی اور فیصل آباد میں اتحادی جماعتوں کے ساتھ منعقد ہوئے کامیاب جلسوں پر انتظامیہ اور اتحادیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم آنے والے دنوں میں اس اتحاد کو مزید مستحکم صورت میں دیکھیں گے۔فیصل آباد کے جلسے میں گلگت سے لے کر کراچی تک پارٹی کارکنان نے بھرپور شرکت کی۔پارٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محمد امجد اور چاروں صوبائی صدور کی محنت سے یہ جلسے کامیاب ہوئے۔ وہ عناصر جو ’’خود کھیلنے،نہ دوسروں کو کھیلنے دینے‘‘کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں،ہمارے کامیاب جلسوں پرحیرت زدہ ہیں ۔ان لوگوں کے لئے جلسوں کی کامیابی تکلیف دہ ہے اس لئے یہ اے پی ایم ایل کے حوالے سے مختلف منفی افواہیں پھیلا رہے ہیں۔سید پرویز مشرف نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ آل پاکستان مسلم لیگ کی تمام تنظیم وہی ہے جو پہلے سے تھی۔پارٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محمد امجد اور تمام صوبائی صدور اور دیگر ذمہ داران وہی ہیں جو پہلے تھے۔ان میں کسی قسم کی کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔پارٹی کا مرکزی دفتر جو پہلے سے ہے،وہی رہے گااس کے علاوہ صوبائی دفاتر بھی پہلے والے ہی رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ فسادی عناصر اپنے آپ کو اے پی ایم ایل کا صدر کہلواتے ہیں،صدر تو کیاانہیں اور ان کے ساتھیوں کو پارٹی کی رکنیت سے بھی خارج کیاجاتا ہے۔سید پرویز مشرف نے کہا کہ جو لوگ ان کی حمایت کریں گے ان کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے پارٹی سے نکال دیا جائے گا۔انہوں نے پارٹی کارکنان کو ہدایت کی کہ فسادیوں کی جھوٹی باتوں میں آئے بغیرپارٹی قیادت سے تعاون کریں۔انہوں نے اپنے پیغام میں پوری قوم کویوم آزادی کی مبارکباد بھی پیش کی ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...