20لاکھ تاوان نہ ملنے پر 8سالہ طالب علم قتل ، نعش کھیتوں سے برآمد

20لاکھ تاوان نہ ملنے پر 8سالہ طالب علم قتل ، نعش کھیتوں سے برآمد
 20لاکھ تاوان نہ ملنے پر 8سالہ طالب علم قتل ، نعش کھیتوں سے برآمد

  



فیروزوالہ ( نمائندہ پاکستان) بیس لاکھ روپے تاوان نہ ملنے پر اغواء کاروں نے آٹھ سالہ طالب علم کو قتل کر دیا۔نعش کھیت میں پھینک دی اور فرار ہو گئے۔ بتایا گیا ہے کہ تھانہ فیروزوالہ کے علاقہ مصطفی آباد ( ونڈالہ دیال شاہ) میں سات روز قبل نا معلوم افراد نے مویشیوں کے بیوپاری ساجد علی کے آٹھ سالہ بیٹے محمد عمر کو اغواء کر لیا بعد میں فون کے ذریعے بیس لاکھ روپیہ تاوان مانگا ۔ تاوان کی رقم نہ ملنے پر اغواء کاروں نے مغوی کو قتل کرکے اس کی نعش کالا خطائی روڈ کی آبادی حاجی کوٹ کے کھیت میں پھینک دی فرار ہو گئے فیروزوالہ پولیس نے نعش قبضہ میں لے کر نا معلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ مقتول چھ بہن بھائیوں کا بڑا بھائی تھا۔ مقتول کی نعش جب گھر پہنچی تو علاقہ میں کہرام مچ گیا۔ بہن بھائی ، محلہ دار دھاڑیں مار کر روتے رہے۔ مقتول کے ورثاء نے الزام لگایا ہے کہ پولیس کو اس واقع کی اطلاع دی گئی پولیس کی تاخیر کی وجہ سے مغوی کو قتل کیا گیا۔اعلیٰ حکام ذمہ داران افسران کے خلاف کاروائی کریں۔

بچہ قتل

مزید : صفحہ اول