افغانستان میں مزید فوج بھجوانے کے بجائے انخلا پر غور کریں ، افغان طالبان کا ٹرمپ کے نام خط

افغانستان میں مزید فوج بھجوانے کے بجائے انخلا پر غور کریں ، افغان طالبان کا ...

  



کابل (این این آئی)افغانستان کے طالبان نے امریکی صدر کے نام لکھے گئے خط میں کہاہے کہ افغانستان میں مزید فوج بھجوانے بجائے امریکی افواج کے انخلاء پر غور کریں ٗ امریکی اور اتحادی افواج کی16سالہ موجودگی کے باوجودافغانستان میں امن قائم نہیں ہوسکا ٗ افغانستان انتظامی امور میں سب سے کرپٹ اور معاشی لحاظ سے غریب ترین ملک میں تصور کیا جاتا ہے ٗ افغان عوام تمہارے دست نشین جھوٹے ٗ کرپٹ حکمرانوں کے دعوؤں اور نعروں پر اعتماد نہیں کرینگے ٗ کرائے کی قاتلوں ٗبدنام سیکیورٹی کمپنیوں اور بے ضمیر غلاموں سے جنگ کبھی نہیں جیتی جاسکتی ۔ منگل کو افغان طالبان کی جانب سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے نام لکھے گئے خط میں کہاگیا کہ تمہاری فوج نے ہمارے ملک میں مکمل 16 برس گزارے اور افغانستان کو مسخر کرنے کیلئے تمام قوت کو بروئے کار لایا ٗایسے حالت میں کہ تمہارے ملک کے سابق حکمرانوں نے افغانستان پر حملہ کیلئے ایک وسیع عالمی اتحاد کو قائم کیا تھا ٗاس کے باوجود افغانستان میں تمہاری 16 سالہ موجودگی کا نتیجہ یہ ہوا کہ آج افغانستان سیکورٹی کے لحاظ سے سب سے نا امن ٗانتظامی امور میں سب سے کرپٹ اور معاشی لحاظ سے غریب ترین ملک تصور کیا جاتا ہے۔خط میں کہاگیا کہ وجہ یہ ہے کہ یہاں بیرونی جارحیت کے ذریعے افغان غیور عوام کا ارادہ محکوم ٗ ان کے ملک کی خودمختاری صلب اور ملک کی باگ ڈور کو ایسے افراد کے حوالے کیا جاچکا ہے،جو اجنبی غلامی کی وجہ سے افغان عوام کے درمیان سب سے منحوس ٗنفرت انگیز اور بدقسمت چہرے تصور کیے جاتے ہیں۔ امریکی صدر کے نام خط میں کہاگیا کہ افغانستان میں آپکی جانب سے منتخب شدہ کٹھ پتلی آپ کو افغانستان کے حالات متعارف کروادیئے اور اپنے سنگین خطاب سے افغانوں کے حامی القاب سے آپ کو نوازا مگریاد رکھیں کہ افغان سلیم عقل کے حامل ہیں، وہ افغانستان میں تمہاری 16 سالہ موجودگی کے نتائج پر فیصلہ کریں گے اور تمہارے دست نشین جھوٹے اور کرپٹ حکمرانوں کے دعوؤں اورنعروں پر اعتماد نہیں کریں گے۔

ٹرمپ کے نام خط

مزید : صفحہ اول


loading...