عدالتی فیصلے کے بعد عوامی سپورٹ میں اضافہ ہوا ، سعد رفیق

عدالتی فیصلے کے بعد عوامی سپورٹ میں اضافہ ہوا ، سعد رفیق
 عدالتی فیصلے کے بعد عوامی سپورٹ میں اضافہ ہوا ، سعد رفیق

  



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)خواجہ سعد رفیق نے جاتی امرا میں مشاورتی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اجلاس میں فیصلہ ہوا ہے کہ نواز شریف عوامی رابطہ مہم جاری رکھیں گے تاہم اس کیلئے مشاورت کا عمل جاری ہے اور جلد حتمی پروگرام جاری کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کی تنظیم سازی کے متعلق بھی بات ہوئی ہے اور اس کے لئے کمیٹیاں بنائی جائیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ آصف علی زرداری ایک سمجھدار سیاستدان ہیں لیکن ان کے ساتھ ہاتھ ہو گیا ہے ۔ بلاول کسی اور کی لائن پر چل رہے ہیں ۔ وہ کہتے ہیں کہ وہ ہمارا فون نہیں سنیں گے وہ بتائیں انہیں فون کیا کس نے ہے۔ عوامی مفاد میں ترامیم میں ساتھ نہیں دیں گے تو عوام انہیں چھوڑیں گے۔ زرداری صاحب بلاول کو خود لائن دیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کو اب معلوم ہوا ہے کہ ان سے تاریخی غلطی ہو گئی ہے اور انہیں اس کا احساس ہونا شروع ہو گیا ہے ۔ وہ قسمیں اٹھا کر بھی کہیں گے کہ اس میں میرا کردار نہیں تو کوئی نہیں مانے گا کیونکہ مرکزی مہرہ آپ ہی تھے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے سیاسی مخالفین کا خیال تھا کہ نواز شریف پر عدالتی نا اہلی کا ٹھپہ لگے گا اور وہ سر نیچا کر کے گھر چلے جائیں گے لیکن عدالتی فیصلے کے بعد ہماری عوامی سپورٹ میں کمی کی بجائے اضافہ ہوا ہے ۔ جو ہمارے خلاف بحری جہاز کا ’’ بھو بھو ‘‘ بنے ہوئے تھے اللہ ان کا بھی بھلا کرے ۔ لیکن جی ٹی روڈ کے سفر سے کچھ چیزیں بدلی ہیں اور مخالفین کو اس کا اندازہ ہو گیا ہے ۔ نواز شریف کا کارکن اب وزیر اعظم ہے او ر دوسرے کارکن وزراء ہیں ، اب بھی سب کچھ نواز شریف کے ہاتھ میں ہے بتائیں اپوزیشن کے ہاتھ میں کیا آیا ہے ۔نواز شریف کے ساتھی حکومت کر رہے ہیں اور وہ جلسے کر رہے ہیں ۔میں عمران خان کی خدمت میں بڑے ادب اور شان میں گستاخی کئے بغیر عرض کرنا چاہتا ہوں کہ وہ وقت آئے گا جب آپ ہمارے ساتھ آئیں گے اور ہمیں آپ کے پاس نہیں آنا پڑے گا ۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی اصلاحات بل کے حوالے سے بڑے پر عزم ہیں کہ باقی جماعتوں کے تعاون سے انتخابی اصلاحات کی منظوری کر الیں گے اور یہ تاریخی دن ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ عوامی رابطہ مہم کے حوالے سے چیزوں کا جائزہ لیا جارہا ہے اور اس حوالے سے تمام آپشنز پر غور کر رہے ہیں تاہم مشاور ت کے عمل کے بعد جلد پروگرام جاری کر دیں گے۔وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ نواز شریف نے عوامی رابطہ مہم جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے حوالے سے آئندہ چند روز میں شیڈول جاری کیا جائے گا، موجودہ آئین میں بہت سی ترامیم کی ضرورت ہے کیونکہ ہم یہ چاہتے ہیں کہ ہمارے ساتھ جو ہونا تھا وہ ہوگیا آگے آنے والے لوگوں کے ساتھ ایسا نہیں ہونا چاہیے۔ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے مشن جی ٹی روڈ کے دوران بارہا آئین میں ترامیم کا کہا ہے ، اس حوالے سے آئین میں بہت سی ترامیم کی جاسکتی ہیں جبکہ ہمارا یہ خیال ہے کہ ہمارے ساتھ جو ہونا تھا وہ ہوگیا آئندہ آنے والے وزرائے اعظم کے ساتھ ایسا نہیں ہونا چاہیے ، اس کے علاوہ آئین میں فوری اور سستے انصاف کی فراہمی کے لئے بھی شقیں شامل کی جائیں گی۔چوہدری نثار کے حوالے سے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ وہ مسلم لیگ(ن) کی پالیسی ساز رہنما ہیں اور جس پارٹی میں ایشوز پر اختلافات نہیں ہوتے وہ جمہوری پارٹیاں نہیں ہوتیں ، نثار اختلافات کے باوجود نواز شریف کی نا اہلی کے بعد ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ عمران خان نے وزیر اعظم کی نااہلی کا مہرہ بن کر بہت بڑی سیاسی غلطی کی ہے اس کا احساس انہیں بعد میں ہوگا۔ آصف علی زرداری سے لاکھ اختلاف سہی لیکن ان سے زیاد ہ سمجھ دار سیاست دان کوئی نہیں ہے۔مسلم لیگ(ن) کے پارٹی رہنماؤں کے اجلاس کے حوالے سے انہوں نے کہا ہے کہ این اے 120میں الیکشن مہم کا آغاز کردیا ہے اور کلثوم نواز ہماری امیدوار ہوں گی اسی حوالے سے مشاورت کی گئی اور انتخابی خدو خال طے کئے گئے ہیں۔ یہ مشاورتی اجلاس مزید جاری رہیں کہ کیوں آئندہ چند روز میں ن لیگ کی تنظیم سازی کے حوالے سے اقدامات کئے جائیں گے۔ جی ٹی روڈ مشن کے دوران 90فیصد نواجوان ہمارے ساتھ تھے اس لئے نوجوانوں کو بھی پارٹی میں فعال کریں گے۔

مزید : صفحہ اول


loading...