437غیرقانونی بھرتیاں،فردجرم عائد کرنے کیلئے پرویزاشرف 19ستمبرکوطلب

437غیرقانونی بھرتیاں،فردجرم عائد کرنے کیلئے پرویزاشرف 19ستمبرکوطلب

  



لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت نے پیپکومیں 437افرادکی غیرقانونی بھرتیوں کے کیس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویزاشرف اورپیپکوکے 7افسروں پر فردجرم عائد کرنے کے لئے انہیں19ستمبرکوطلب کرلیا ہے ۔راجہ پرویزاشرف نے عدالت سے مزیدنقول کی استدعاکی جس پرعدالت نے ریمارکس دیئے کہ اس طرح درخواستیں دے کرعدالت کاقیمتی وقت ضائع مت کریں،عدالت متعلقہ کاغذات فراہم کرچکی ہے۔نیب کی جانب سے دائرکئے گئے مذکورہ ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت میں شروع ہوئی تو پیپلز پارٹی کے سابق وزیراعظم راجہ پرویزاشرف کے وکیل کوریفرنس کی نقول فراہم کرتے ہوئے راجہ پرویزاشرف دیگر7افسروں کوآئندہ سماعت پرفردجرم عائد کرنے کے لئے طلب کرلیاہے۔ سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے پیشی کے موقع پربات چیت کرتے ہوئے کہا کہ نیب نے دہرا معیار اپنا رکھا ہے ،پیپلزپارٹی کے وزیراعظم کے خلاف ریفرنس آتے ہیں تو نام ای سی ایل میں ڈال دیا جاتا ہے لیکن شریف فیملی کا ریفرنس آیا تو کسی فرد کا نام نہیں ڈالا گیا،انہوں نے کہاکہ 62اور63کی شق ضیاء4 الحق نے سیاستدانوں کو بلیک میل کرنے کے لئے شامل کی تھی جب انہوں نے نواز شریف کو یہ شق ختم کرنے کو کہاتوانہوں نے مخالفت کی اوراب اْن پر یہ شق استعمال ہوئی تو تبدیل کرنے کا خیال آگیاہے۔

مزید : صفحہ آخر