سینیٹ ،قومی وصوبائی اسمبلیوں کے تمام ارکان کے بلڈ ٹیسٹ کرانے کا فیصلہ

سینیٹ ،قومی وصوبائی اسمبلیوں کے تمام ارکان کے بلڈ ٹیسٹ کرانے کا فیصلہ

  



پشاور(نیوزرپورٹر)قومی و صوبائی اسمبلی اورسینیٹ کے تمام ارکان کے بلڈٹیسٹ کرانے اورمنشیات کے عادی ارکان کو نااہل قرار دینے کے لئے پشاورہائی کورٹ میں رٹ دائرکردی گئی ہے رٹ پٹیشن سیف اللہ محب ایڈوکیٹ کی جانب سے دائرکی گئی ہے جس میں موقف اختیار کیاگیاہے کہ آئین کے تحت ارکان قومی و صوبائی اسمبلی اورسینیٹ کے اراکین کے لئے آرٹیکل62اور63پرپورااترناضروری ہے کیونکہ یہ آئین میں بھی ہے کہ آرٹیکل62اور63کے تحت رکن اسمبلی کو اسلامی تعلیمات کاعلم ہوناضروری ہے اوروہ قرآن و احادیث جانتے ہوں ہواوراس پرعملدرآمد بھی کرتاہو کیونکہ قرآن میں ہے کہ عوام حاکم وقت کے تمام احکامات مانے گی اورضروری ہے کہ حاکم وقت اسلامی تعلیمات سے باخبرہولہذا اس مقصد کے لئے ضروری ہے کہ صوبائی و قومی اسمبلی اورسینیٹ کے تمام اراکین کابلڈٹیسٹ کرایاجائے تاکہ پتہ چل سکے کہ کوئی رکن منشیات یاشراب کااستعمال تو نہیں کرتااورپازیٹورپورٹ آنے کی صورت میں ایسے اراکین کو نااہل قرار دیا جائے جو آئین کے آرٹیکل62اور63پرپورانہیں اترتے جبکہ2018ء کے انتخابات کے لئے بھی امیدواروں کاٹیسٹ لازم قرار دیا جائے پشاورہائی کورٹ کادورکنی بنچ آئندہ چند روزمیں رٹ کی سماعت کرے گا۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...