سپریم کورٹ نے ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کرلیا، نیب میں کیس بھیجنے کی ضرورت نہیں تھی: رانا ثناءاللہ

سپریم کورٹ نے ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کرلیا، نیب میں کیس بھیجنے کی ضرورت ...
سپریم کورٹ نے ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کرلیا، نیب میں کیس بھیجنے کی ضرورت نہیں تھی: رانا ثناءاللہ

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ اگر سپریم کورٹ نے نواز شریف اور ان کے خاندان کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے تو انہیں کیس نیب میں نہیں بھیجنے چاہیں بلکہ شریف خاندان کو سزا سنا دینی چاہیے۔سپریم کورٹ کے نیب کے حوالے سے ریمارکس ہیں کہ یہ ادارہ مر چکا ہے تو عدالت شریف خاندان کو ایک مردے کے پاس کیوں بھیج رہی ہے؟

چھٹیاں منا کر گھر والے واپس آئے تو گھر کے فرش اور دیواروں پر خون ہی خون، لیکن اس کی حقیقت سامنے آئی تو خوشی کی کوئی انتہا نہ رہی کیونکہ۔۔۔

نجی ٹی وی کے پروگرام ”آپس کی بات “ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ کا کہنا تھا کہ شریف خاندان کے خلاف کیس نیب میں بھیج دیا گیا مگر عدالت نے یہ نہیں بتایا کہ کس قانون کے تحت نیب کو کیس بھیجا گیا ہے حالانکہ سپریم کورٹ میں کیس کی سماعت سے پہلے نیب کو تحقیقات کر نا چاہیے۔ سپریم کورٹ کے بقول تمام ادارے فوت ہو چکے ہیں میرا خیال ہے کہ ملک اس وقت خفیہ طاقت پر چل رہا ہے اور ایک دو ادارے ہی ملک کو چلا رہے ہیں۔مجھے بحیثیت شہری اس بات کا حق حاصل ہے کہ میں اپنے بارے میں ہونے والی تحقیقات کو جان سکوں لیکن مجھے حالات سے بے خبر رکھ کر میرے بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

مزید : لاہور