زمیندار کے کارندوں کا نوجوان پر بدترین تشدد، الٹا لٹا کر جوتے مارے

16 اگست 2018 (11:48)

بہاولنگر (ویب ڈیسک) نواحی علاقہ مسیتا تھبڑوں میں بااثر جاگیردار کا 20 سالہ نوجوان پر بدترین تشدد، غریب کسان کے 20 سالہ بیٹے زاہد پر 10 کلو کھاد چوری کرنے کا الزام لگایا گیا، تشدد کرتے ہوئے بہنوں کی گالیاں دیتے رہے ۔ 

تفصیلات کے مطابق میاں عمر متیانہ نامی جاگیردار کے حکم پر غریب کسان کے بیٹے کو ڈیرے پر بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا، اسے جوتے اور مکے مارتے رہے، الٹا لٹکا کر بھی مارا گیا۔ جاگیردار کے آدمیوں نے تشدد کے بعد زاہد کے ہاتھ پاﺅں باندھ دیئے۔ غریب کسان چیخ چیخ کر معافیاں مانگتا رہا لیکن جاگیردار کے آدمی اسے تشدد کا نشانہ بناتے رہے۔ پولیس نے زخمی زاہد کا مقدمہ درج کرنے سے بھی انکار کر دیاتاہم سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہونے کے بعد اپنےخلاف انکوائریاں کھلنے کے ڈر سے پولیس حکام کی بھی آنکھیں کھلیں اور   پولیس نے تفتیش شروع کر دی۔

مقامی ذرائع  نے بتایا کہ ملزمان بااثر ہیں اور پولیس بھی ان کے سامنے بے بس ہے ، انسانیت کی تذلیل کے باوجود تفتیش کے نام پر پولیس ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے اور تاحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی جاسکی ۔ 

مزیدخبریں