لاہور میں یوم سیاہ ریلی کی جھلکیاں 

لاہور میں یوم سیاہ ریلی کی جھلکیاں 

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں)بھارتی یوم آزادی کو یوم سیاہ کے طور پر منانے کیلئے ریلی میں شرکت کیلئے شہری کئی گھنٹے پہلے گورنر ہاؤس پہنچ گئے۔ ٭وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار گورنر ہاؤس پہنچے تو راستے میں شہریوں نے کشمیر کے پرچم لہرا کر خیرمقدم کیا۔ ٭وزیراعلیٰ ہاتھ ہلا کر پرجوش شرکاء کے نعروں کا جواب دیتے رہے۔ ٭وزیراعلیٰ گورنر ہاؤس پہنچے تو ارکان اسمبلی، پی ٹی آئی کے عہدیداروں اور کارکنوں نے ان کا خیرمقدم کیا۔ ٭وزیراعلیٰ عثمان بزدار،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور گورنر پنجاب چودھری محمد سرور کے ہمراہ گورنر ہاؤ س سے ٹرک پر سوار ہوئے۔٭مرکزی رہنماؤں کا ٹرک بے پناہ رش کی وجہ سے گورنر ہاؤس سے فیصل چوک کی طرف رینگ رینگ کر چلتا رہا۔ ٭تحریک انصاف کے رہنما گلوکار ابرارالحق، سیمی راحیل اور فن و ثقافت سے تعلق رکھنے والی مختلف شخصیات بھی ریلی میں شریک تھیں۔٭پرجوش شرکاء ریلی کے ساتھ چلتے ہوئے ”مودی مردہ باد، کشمیر بنے گا پاکستان، کشمیر کی آزادی تک جنگ رہے گی“ کے نعرے لگاتے رہے۔٭وزیراعلیٰ عثمان بزدار، گورنر پنجاب چودھری سرور، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور دیگر شرکاء نے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ رکھی تھیں۔ ٭شرکاء نے سبز ہلالی پرچم، کشمیر کا پرچم اور سیاہ جھنڈے اٹھا رکھے تھے۔٭یوم سیاہ کی ریلی کی مناسب سے سیاہ رنگ کے غبارے بھی چھوڑے گئے۔ ٭سٹیج پر آزاد کشمیر کے رکن اسمبلی محی الدین دیوان، صوبائی وزراء ڈاکٹر یاسمین راشد، سید سعیدالحسن شاہ، راجہ بشارت، چوہدری ظہیر الدین، حافظ ممتاز احمد اور دیگر رہنما و سیاسی قائدین بھی موجود تھے۔ ٭کشمیری رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال ملک اور ان کی کمسن بیٹی نے ماتھے پر سیاہ پٹی باندھ کر احتجاج کیا۔ ٭مشعال ملک کے خطاب کے دوران ریلی کے شرکاء نے ہاتھ اٹھا کر کشمیریوں کا ساتھ دینے کا عہد کیا۔ ٭مشعال ملک نے تقریر کے دوران نعرہ تکبیر، نعرہ حیدری، پاکستان زندہ باد اور کشمیر پائندہ باد کے نعرے لگوائے۔ ٭وزیراعلیٰ عثمان بزدار تقریر کیلئے آئے تو سٹیج پر رہنماؤں نے نشستوں پر کھڑے ہو کر ان کا خیرمقدم کیا۔٭وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے مرکزی مقرر کی حیثیت سے آخر میں خطاب کیا۔

جھلکیاں 

مزید :

صفحہ اول -