دنیا خاموش رہی تو کشمیر یوں کے خون نا حق کی قیمت اد ا کرنا پڑیگی: مسلم لیگ (ن)

دنیا خاموش رہی تو کشمیر یوں کے خون نا حق کی قیمت اد ا کرنا پڑیگی: مسلم لیگ (ن)

  

مظفر آباد (این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن)نے کہاہے کشمیر کے بغیر پاکستان کا وجود، نظریہ اور آزادی نامکمل ہے،عالمی برادری خا موش تماشائی بنی رہی تو دنیا کو بھی کشمیریوں کے خون ناحق کی قیمت ادا کرنا پڑے گی،کشمیر کشمیریوں کا تھا، ہے اور رہے گا، بھارت جو مرضی کرے، وہ قابض، ظالم اور قاتل تھا، ہے اور رہے گا،کشمیر کی آزادی کیلئے پاکستان کا معاشی، خارجی اور دفاعی لحاظ سے طاقتور ہونا لازم ہے،مظفرآباد میں کھڑے ہوکر مسلم لیگ (ن) کشمیریوں کو یکجہتی کا پیغام دیتی ہے، ان خیالات کا اظہار جمعرات کو مسلم لیگ (ن)کے زیر اہتمام کشمیر یوں سے یکجہتی کیلئے ریلی نکالی گئی جس میں وزیراعظم آزادکشمیر، احسن اقبال،خواجہ آصف،مریم اورنگزیب مرتضیٰ جاوید عباسی کیپٹن صفدر محسن شاہنواز،طارق فضل چوہدری شاہ غلام قادر مشتاق منہاس چوہدری عزیز نے شرکت کی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کیا،سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف کا اپنے خطاب میں کہنا تھا ہم جتنا اتحاد کی کوشش کرتے ہیں حکومت اتنی تفریق پیدا کرتی ہے، آج حالات کا تقاضا ہے پوری قوم متحد ہو ایک ہو، خالی سفارتی تعلقات ڈاون گریڈ کرنے سے کچھ نہیں ہو گا۔ ہندوستان سے سفارتی تعلقات کو مکمل ختم کیا جائے۔ ہمیں معذرت خواہانہ رویہ نہیں اپنانا چاہیے،سرینگر کی سڑکوں پر بہادری کی لازوال داستانیں رقم کی گئیں،پاکستان کو یہ بتانا چاہیے  ہم آخری سطح تک جائیں گے، تجارتی تعلقات کو مکمل طور پر ختم کرنا چاہیے۔ مقبوضہ کشمیر کے بچوں عورتوں کو سلام پیش کرتا ہوں، ہمیں کشمیریو ں کو کبھی یہ احساس نہیں ہونے دینا پاکستان نے کوئی سودے بازی کی، خالی سفیر واپس بھجوانے سے بھی کام نہیں چلے گا اب آگے جانا ہے۔ سلامتی کونسل کے آج ہونیوالے اجلاس میں ہمیں یہ بتانا چاہیے ہم کوئی بھی قدم اٹھانے کیلئے تیار ہیں، پاکستانی کشمیر کے معاملے پر احمقوں کی جنت میں نہیں رہتے، مودی نے پاکستان کی شہ رگ پر وار کیا ہے قائد اعظمؒ نے کشمیر کو شہ رگ کہا تھا۔ ہندوستان کو منہ توڑ جواب دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں، بدقسمتی سے ہندوستان کو منہ توڑ جواب ہمارے حکمرانوں نے نہیں دیا۔ ٹرمپ کے سامنے کشمیر کا مقدمہ اگر عمران خان نے دلیری سے لڑا ہوتا تو یہ نوبت نہ آتی، بتایا جاے ٹرمپ کے سامنے کشمیر پر کیا بات کی تھی جو بھارت نے یہ وار کیا؟۔ جنرل اسمبلی میں کشمیر کا مقدمہ پیش کرنے کیلئے فاروق حیدر کی سربراہی میں وفد بھیجا جائے۔ اگر وفاقی حکومت سنجیدہ ہے تو راجہ فاروق حیدر کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں بھیجے جہاں وہ اپنا مقدمہ خود پیش کرے۔ ریلی سے خطاب میں مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کشمیر کے بغیر پاکستان کا وجود، نظریہ اور آزادی نامکمل جبکہ آج اقوام ِ متحدہ کیلئے امتحان کا دن ہے۔ سیاہ بخت بھارتی حکمرانوں کے سیاہ کارناموں کیخلاف آج پورا پاکستان اور کشمیر احتجاج کررہا ہے۔پاکستان کے عوام کشمیریوں کا مقدمہ لڑیں گے۔نوازشریف وزیراعظم ہوتا تو کسی بھارتی حکمران کو کشمیر پر اس جارحیت کی جرات نہ ہوتی۔ ہر پاکستانی کشمیر کیلئے جان قربان کرنے کی ہر حد تک جانے کو تیار ہے، مظفرآباد میں کشمیریوں سے یک جہتی کیلئے ریلی کا مقصد دنیا کو پیغام دینا ہے کشمیری بے آسرا اور تنہا نہیں۔جب وزیراعظم نواز شریف تھا،دشمن خود چل کر آیا اور کشمیر کی خودمختا ر ی کو تسلیم کیا۔کشمیریوں کا سودا کسی صورت نہیں کرنے دینگے۔آج مقبوضہ کشمیر کے عوام کیلئے نہ نکلے تو تاریخ ہمیں کبھی معاف نہیں کریگی۔محسن شاہنواز رانجھا نے کہاکشمیر کے معاملے پر کوئی تقسیم نہیں ہم سب ان کی پشت پر ہیں۔مرتضیٰ جاوید عباسی نے کہا اب ہماری ریلیاں صرف اور صرف کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے ہونگی۔سابق وزیر طارق فضل چوہدری نے کہا کشمیر کا خصوصی سٹیٹس تبدیل کرنے کا فیصلہ ناقابل قبول ہے، ہمارا ہر ایک بچہ جوان بوڑھا کشمیریوں کے ہمراہ کھڑا رہیگا۔سر دار محمد یوسف کا کہناتھا ہندوستان کشمیریوں کی آزادی سلب کرکے اپنی آزادی کا دن نہیں منا سکتا۔ ہماری قیادت جیلوں میں ہے مگر ہم اپنے بھائیوں کیساتھ ہیں۔ پاکستان اور آزاد وادی کا بچہ بچہ کٹ مرے گا کشمیریوں اورافواج پاکستان کیساتھ ملکر بھارت کیخلاف لڑئے گا۔

مسلم لیگ ن 

مزید :

صفحہ اول -