انتہاءپسند مودی سرکار عالمی امن کیلئے خطرہ بن گئی، بھارتی وزیر دفاع نے نیوکلیئر پالیسی میں تبدیلی کا عندیہ دیدیا

انتہاءپسند مودی سرکار عالمی امن کیلئے خطرہ بن گئی، بھارتی وزیر دفاع نے ...
انتہاءپسند مودی سرکار عالمی امن کیلئے خطرہ بن گئی، بھارتی وزیر دفاع نے نیوکلیئر پالیسی میں تبدیلی کا عندیہ دیدیا

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) مودی سرکار عالمی امن کیلئے خطرہ بن گئی ہے جس نے پہلے مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 370 کا خاتمہ کیا اور اب اس کے وزیر دفاع نے نیوکلیئر پالیسی میں تبدیلی کا عندیددیدیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی وزیر دفاع نے نیوکلیئر پالیسی میں تبدیلی کا عندیہ دیا ہے اور ان کا بیان خطے کو ایٹمی جنگ کی طرف دھکیلنے کے مترادف ہے۔ بھارتی وزیر دفاع کے بیان سے کشمیر کا نیوکلیئر فلیش پوائنٹ ہونا ثابت ہو گیا ہے اور سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا سیکیوٹی کونسل کی میٹنگ سے پہلے بھارت نے اقوام عالم کو دھمکی دی ہے؟

بھارتی وزیر دفاع نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں لکھا ”پوکھران وہ علاقہ ہے جس نے اٹل بہاری واجپائی کے انڈیا کو ایٹمی طاقت بنانے کے پختہ عزم کو دیکھا اور اس کے ’استعمال میں پہل نہ کرنے‘ کے نظرئیے پر سختی سے قائم رہا۔ انڈیا اس نظرئیے پر سختی سے کاربند رہا لیکن مستقبل میں کیا ہو گا، یہ حالات پر منحصر ہے۔“

انہوں نے ایک اور ٹویٹ میں لکھا ”انڈیا کی جانب سے ذمہ دار ایٹمی قوت کی حیثیت حاصل کرنا اس ملک کے ہر شہری کیلئے قومی فخر کا باعث ہے۔ یہ قوم اٹل بہاری واجپائی کی عظمت کی قرض دار رہے گی۔“

بھارتی وزیر دفاع راج ناتھ کا بیان خطرناک انتہاءپسند سوچ ہے اور ایٹمی جنگ کے خطرے کی طرف اشارہ ہے۔ بھارت نے 1974ءمیں بھی عالمی قوانین کی دھجیاں اڑاتے ہوئے دھماکے کئے اور بھارت کے اس عمل نے جنوبی ایشیاءکے امن کو خطرے میں ڈال دیا تھا۔

مزید :

اہم خبریں -بین الاقوامی -