قانون سازوں کوپولیس اصلاحات کی طرف راغب کرنے کیلئے میڈیا کا کردار کلیدی ہے، سینئر صحافی عامر غوری

قانون سازوں کوپولیس اصلاحات کی طرف راغب کرنے کیلئے میڈیا کا کردار کلیدی ہے، ...

  

لاہور(کرائم رپورٹر)جرائم اور پولیس سے متعلقہ حساس معاملات پر رپورٹنگ کے حوالے سے قوانین، قانونی اصطلاحات اور تفتیش کے طریقہ کار پر مکمل عبور حاصل ہونا ضروری امر ہے وگرنہ پیشہ ورانہ پیچیدگیاں جنم لے سکتی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار سینئر صحافی عامر غوری نے گزشتہ روز لاہور میں منعقدہ پروگرام' پولیس عوام ساتھ ساتھ' کے تحت میڈیا ایوارڈز کی ایک آن لائن تقریب سے خطاب میں کیا۔ واضح رہے کہ یہ ایک ملک گیر جامع پروگرام تھا جس کا اہتمام کمیونیکیشنز کمپنی کمیونیکینشز ریسرچ سٹریٹجیز(سی آر ایس) نے کیا۔ پروگرام کے تحت ملک بھر سے متعلقہ شعبوں کے ماہرین کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کیا گیا اور بہتر پولیسنگ کے حوالے سے جامع سفارشات مرتب کی گئیں۔

 اس کے علاوہ ملک بھر سے قومی و صوبائی اسمبلی، سپریم کورٹ، ہائی کورٹس اور جرائم پر رپورٹنگ کرنے والے اخبار، ٹیلی ویژن اور ڈیجیٹل میڈیا سے وابستہ صحافیوں کیلئے ایک مقابلہ کا انعقاد کیا گیاجس کے لاہور سے جیتنے والوں کے ناموں کا اعلان گزشتہ روز ا س منعقدہ تقریب میں کیا گیا۔ مقامی اخبار سے وابستہ صحافی ارشد ڈوگر، نیوز چینل سے وابستہ نوجوان صحافی ہما صدف اور ڈیجیٹل میڈیا سے وابستہ نوجوان بلاگر برہان الدین اپنی اپنی کیٹگریز میں کامیاب قرار پائے۔ سی آر ایس کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر انیق ظفر نے کامیاب قرار پانے والوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ قانون سازوں کوپولیس اصلاحات کی طرف راغب کرنے کیلئے میڈیا کا کردار کلیدی ہے۔

آنے والے دنوں میں ان کاوشوں کو جاری رکھا جائے گا۔ 

مزید :

علاقائی -