چارسدہ، ضلع بھر میں کھلنے والی 19 نجی تعلیمی اداروں کیخلاف کاروائی

چارسدہ، ضلع بھر میں کھلنے والی 19 نجی تعلیمی اداروں کیخلاف کاروائی

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ) ضلع بھر میں کھلنے والی 19 نجی تعلیمی اداروں کے خلاف کاروائی۔ اسسٹنٹ کمشنر عدنان جمیل 10نجی تعلیمی اداروں کو سیل کر دیا۔ حکومتی احکامات کے بر عکس کھلنے والے دیگر نجی تعلیمی اداروں کے خلاف کاروائی جاری ہے۔ نجی تعلیمی اداروں کے حوالے سے حکومتی احکامات پر ہر حالت میں عمل درآمد یقینی بنایا جائیگا۔ڈپٹی کمشنر چارسدہ عدیل شاہ۔ تفصیلات کے مطابق پرائیوٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کے فیصلے کے مطابق ضلع بھر میں بعض نجی تعلیمی ادارے کھل گئے جہاں ایس او پیز پر مکمل عمل درآمد دیکھنے میں آیا۔ سکولوں میں معمول کے مطابق تدریس کا عمل شروع کیا گیا۔ پہلے روز حاضری کم رہی۔ سکول منتظمین کی طرف سے ماسک، سنیٹائزر اور سماجی فاصلے کا خاص خیال رکھا گیا اور ہر کلاس روم میں پچاس فی صد طلباء کو بٹھایا گیا۔ دوسری طرف ضلعی انتظامیہ نے ضلع بھر میں کھلنے والی 19 نجی تعلیمی اداروں کے خلاف کاروائی شروع کی اور اسسٹنٹ کمشنر عدنان جمیل نے 10نجی تعلیمی اداروں کو سیل کر دیا۔ اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر چارسدہ عدیل کا  کہنا تھا کہ حکومتی احکامات کے بر عکس کھلنے والے دیگر نجی تعلیمی اداروں کے خلاف کاروائی جاری ہے۔ نجی تعلیمی اداروں کے حوالے سے حکومتی احکامات پر ہر حالت میں عمل درآمد یقینی بنایا جائیگا۔ حکومتی احکامات کے تحت 15ستمبر سے پہلے کسی بھی تعلیمی ادارے کو کھولنے کی اجازت نہیں دی جائیگی۔ڈپٹی کمشنر عدیل شاہ کے مطابق کاروائی تحصیل بازار، تنگی روڈ، عمرزئی اور تحصیل تنگی میں کی گئی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -