چوری شدہ گاڑی کی عدم برآمدگی، ناقص تفتیش نے پولیس کارکردگی پر سوال اٹھا دئیے 

چوری شدہ گاڑی کی عدم برآمدگی، ناقص تفتیش نے پولیس کارکردگی پر سوال اٹھا ...

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ)نوشہرہ: تھانہ نوشہرہ کلاں کے حدود سے چوری شدہ گاڑی کی عدم برآمدگی ناقص تفتیش نے پولیس کارکردگی پر سوال اٹھا دئیے جدید خطوط پر تفتیش کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے موٹرکار کی عدم برآمدگی کی صورت میں مالکان نے شوبرا چوک میں احتجاج کی دھمکی دے ڈالی شاہ سروس سٹیشن نوشہرہ کے مالک شاہ ایران نے اپنے دفتر میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ چار ماہ قبل انکی موٹر کار GLIجسکی مالیت 23لاکھ روپے ہے نامعلوم کارلفٹر چوری کر گئے اس وقت پولیس نے کہا تھا کہ ایف آئی آر درج نہ کریں اور کارلفٹروں سے لین دین کرکے اپنی کار واپس کریں تاہم ہم نے اپنے دوستوں کے مشورے سے قانونی کاروائی کی تاکہ ایف آئی آر درج ہو اور ریکارڈ رہے کہ اگر موٹرکار کسی واردات میں استعمال ہو تو ہم اس شر سے محفوظ رہے ہم نے چار ماہ قبل ایف آئی آر درج کی پولیس آج تک ہمیں میٹی ٹافی منہ میں دیکر خاموش کرادیتے ہیں انہوں نے کہا کہ خود پولیس نے ہمیں بتایا کہ آپکی موٹرکار ان راستوں سے گئی ہے اور بھکر پہنچی ملزمان گرفتار کئے لیکن موٹرکار برآمد نہ ہوئی اور اب ملزمان بھی رہا ہو چکے ہیں اس ساری صورتحال سے پولیس تھانہ نوشہرہ کلاں کی جدید تفتیش کا بھانڈا پھوٹ گیا انہوں نے مزید کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ پولیس ٹھس سے مس نہیں ہو رہی الٹا ہم سے پوچھتی ہے کہ کی اپراگرس ہے اس لئے اب ہم مجبور ہیں کہ اپنی فریاد میڈیا اور اعلیٰ حکام سے کریں انہوں نے کہا کہ اگر تھانہ نوشہرہ کلاں پولیس نے ہماری گاڑی برآمد نہ کی تو پھر ہم شوبرا چوک میں احتجاج شروع کریں گے روڈ بلاک کریں گے انہوں نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ محمود خان، آئی جی پی کے پی کے سے داد رسی کی اپیل کی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -