شہبازگل کو برہنہ کرکے مارنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، وزیر داخلہ پنجاب کا بیان

شہبازگل کو برہنہ کرکے مارنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، وزیر داخلہ پنجاب کا ...
شہبازگل کو برہنہ کرکے مارنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، وزیر داخلہ پنجاب کا بیان

  

راولپنڈی(ڈیلی پاکستان آن لائن) صوبائی وزیر داخلہ کرنل ریٹائرڈ ہاشم ڈوگرکا کہناہے کہ شہباز گل اڈیالہ جیل میں خیریت سے ہیں، کسی کی مجال نہیں کہ شہباز گل کو انگلی بھی لگائے، وہ وفاق کے قیدی ہیں پنجاب حکومت ان کی سزا میں کمی نہیں کرسکتی۔وزیر داخلہ پنجاب ہاشم ڈوگر نے عمران خان کے چیف آف سٹاف شہباز گل پر جیل میں تشدد کی تردیدکرتے ہوئےکہا ہےکہ وہ بالکل ٹھیک ہیں، شہبازگل کو برہنہ کرکے مارنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

 اڈیالہ جیل راولپنڈی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ہاشم ڈوگرکا کہنا تھا کہ میری شہبازگل سے ملاقات ہوئی ہے، وہ بالکل ٹھیک ہیں، عمران خان سے مل کر انہیں شہباز گل کی صحت کے بارے میں آگاہ کروں گا۔ ہاشم ڈوگرکا کہنا تھا کہ شہبازگل سے کافی سارے لوگوں نے ملاقات کی ہے، شہبازگل وفاق کا کیس ہے،اڈیالہ جیل صرف اس کی کسٹوڈین ہے، پنجاب میں 40 سے زائد جیل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سے بات کر کے، خواتین قیدیوں کے لیے فیملی رومز تعمیر ہونگے، جو قیدی کام کریں گے اس کی اجرت دی جائے گی، پورے پنجاب میں 50 ہزار سے زائد قیدی ہیں،وہ ہمارے مہمان ہیں، قیدیوں کو اپنے اہل خانہ کی طرح درست کریں گے، جیل خانہ جات فورس کو ایگزیکٹو الاؤنس دونگا۔

خیال رہےکہ  چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے ایک انٹرویو میں  شہباز گل کو برہنہ کر کے تشدد کا نشانہ بنائے جانےکا الزام عائد کیا تھا۔

مزید :

قومی -