قومی خزانے کو بچانے کےلئے ترقیاتی منصوبوں کی بر وقت تکمیل کی جائے

قومی خزانے کو بچانے کےلئے ترقیاتی منصوبوں کی بر وقت تکمیل کی جائے

اسلام آباد (کامرس ڈیسک)حکومت ترقیاتی منصوبوںکی بروقت تکمیل کو یقینی بنائے تاکہ ٹیکس دہندگان کی رقم کو غیر ضروری طور پر ضائع ہونے سے بچایا جا سکے ان خیالات کااظہار اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے قائم مقام صدر محمد شکیل منیر نے انسٹی ٹیوٹ آف کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاو¿نٹنٹس آف پاکستان کے زیر اہمتام ©"پروجیکٹ مینجمنٹ پروفیشنلز" کیلئے منعقدہ 5 روزہ تربیتی ورکشاپ کی اختتامی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوںنے کہا کہ پاکستان میںمیگا پراجیکٹس بہتر منصوبہ بندی کے فقدان کی وجہ سے اکثر تاخیر کا شکار ہوتے ہیں جس وجہ ان منصوبوں کی لاگت میں کئی گنا اضافہ ہو جاتا ہے جس سے معیشت پر منفی اثر پڑتا ہے کیونکہ اس بنا پر قومی خزانے پر غیر ضروری بوجھ بڑھتا ہے جبکہ ٹیکس دہندگان کے لئے بھی مشکلات پیدا ہوتی ہیں نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ ایسے منصوبوں کو مکمل کرنے کے لئے حکومت کو بیرونی امداد کا سہارا لینا پڑتا ہے جس سے ملک قرضوں کے بوجھ تلے دبتا جا تا ہے۔ انہوںنے کہا کہ پالیسی سازوں کو چائے کہ وہ پروجیکٹ مینجمنٹ کے جدید اصولوں کو عملی جامہ پہنا کر ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنائیں جس سے ان کی لاگت میں غیر ضروری اضافہ نہیں ہو گا اور ملک کے لئے بہتر نتائج حاصل ہوسکیں۔محمد شکیل منیر نے کہا کہ میگا پراجیکٹس شروع کرنے سے پہلے سٹیک ہولڈرز سے مشاورت نہیں کی جاتی جس سے ایسے منصوبوں کو مکمل کرنے میں کافی مشکلات درپیش آاتی ہیں۔

انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ تمام اہم پراجیکٹس شروع کرنے سے قبل اچھی طرح منصوبہ بندی کری اور تمام سیٹک ہولڈرز سے مشاورت کرے جس سے منصوبے اپنی لاگت کے اندر بروقت مکمل ہونگے اور ملک کے لئے بہتر نتائج برآمد ہونگے۔انہوں نے کہا کہ توانائی بحران کی وجہ سے ملک میںکاروباری اور صنعتی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہو رہی ہیں لہذا حکومت کو چائیے کہ لوڈ شیڈنگ پر قابو پانے کے لئے توانائی کے شعبے میں چھوٹے ، درمیانہ اور بڑے منصوبے شروع کرے تاکہ صنعتوں کو بلاتعطل گیس اور بجلی کی سپلائی کو یقینی بنایا جاسکے انہوںنے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کو بہتر انداز میں مکمل کرنے کے لئے مذید پراجیکٹس مینجمنٹ پروفیشنلز تیار کرنے کی ضرورت ہے تا کہ وہ تمام منصوبوں کو پیشہ وارانہ انداز میں مکمل کریں جس سے ملک کی معیشت کو پائیدار ترقی کے راہوں پر گامزن کرنے میں مدد ملے گی انہوںنے امید ظاہر کی کہ آئی سی ایم کے کی اس ورکشاپ سے شرکاءکو پراجیکٹ مینجمنٹ کے جدید اصول اپنانے اور پراجیکٹس کو قیمت کے اندر ہی بروقت مکمل کرنے کیلئے ضروری معلومات حاصل ہوئی ہو ں گی جن پر عمل درآمد کر کے وہ ملک کیلئے مفید نتائج حاصل کرنے کے قابل ہوں گے۔

مزید : کامرس