دنیا کا وہ منفرد مقام جہاں لوگ خود کشی کرنے جاتے ہیں

دنیا کا وہ منفرد مقام جہاں لوگ خود کشی کرنے جاتے ہیں
 دنیا کا وہ منفرد مقام جہاں لوگ خود کشی کرنے جاتے ہیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ٹوکیو(نیوزڈیسک)دنیا بھر میں ٹیکنالوجی کی دنیا میں انقلاب برپا کرنے والے جاپان کے جنگلوں میں ایک ایسی جگہ بھی موجود ہے جہاں لوگ صرف اور صرف خودکشی کرنے جاتے ہیں۔ کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ جنگلات منحوس ہیں اور بد روحوں کا بسیرا ہیں اور یہاں خودکشی کرنے والوں کو آسانی محسوس ہوتی ہے۔ Aokigaharaنامی یہ جنگل مشہور زمانہ ما?نٹ فیوجی کی شمال مغربی سمت میں واقع ہے۔یہ جنگل تقریباً 35مربع کلومیٹر پرواقع ہے اور دیکھنے میں کافی دلکش محسوس ہوتا ہے لیکن اس کی خوبصورتی پر ہر گز نہیں جانا چاہیے۔اس جنگل میں پہلا قدم رکھنے کے بعد سب سے پہلے جو چیز ذہن میں آتی ہے وہ یہاں کی پر اسرار خاموشی ہے جس سے انسان کو وحشت آنے لگتی ہے۔بہت زیادہ درختوں کی وجہ سے زمین پر سورج کی شعاعیں نہیں پہنچ پاتیں اور ہوا انتہائی سرد اور اور ہر چیز تاریکی میں ڈوبی ہوتی ہے۔یہ بھی ایک پر اسرار حقیقت ہے کہ یہاں جانوروں اور حشرات کی تعداد بھی نہ ہونے کے برابر ہے اور نہ چڑیوں کے چہچہانے کی آواز ہے اور نہ ہی کسی شیر کی دھاڑ۔ آپ کو ایسا محسوس ہوگا کہ یہ تمام جانور ،پرندے اور حشرات شاید کسی ان دیکھی چیز سے چھپنے کی کوشش کر رہے ہیں۔اس جنگل کی جو سب سے ہولناک بات ہے وہ یہ ہے کہ لوگ یہاں آکر خودکشی کرتے ہیں۔اس کے بارے میں مشہور ہے کہ یہ مرنے کے لئے سب سے بہترین جگہ ہے جہاں لوگ مرنے کے لئے جاتے ہیں۔ گولڈن گیٹ بریج سان فرانسسکو کے بعد یہ جنگل دوسری ایسی جگہ ہے جہاں لوگ مرنے کے لئے جاتے ہیں۔1950کی دہائی کے بعد اس جنگل میں مرنے والوں کی تعداد میں روز براز اضافہ ہو رہا ہے اور صرف 2003ئ میں 108لوگوں نے یہاں آکر اپنی زندگی کا خاتمہ کیالیکن کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ اصل تعداد اس سے بھی زیادہ ہے جس کی وجہ جنگل کا وسیع و عریض رقبہ اور کئی حصوں تک لوگ شاذوناذر ہی جاتے ہیں ،آئے روز ایسے لوگوں کے جسد خاکی ملتے رہتے ہیں جنہوں نے خودکشی کی ہوتی ہے۔

مزید : علاقائی