جمعیت علماء اسلام(س) کی صوبائی عاملہ و شوریٰ کا اجلاس

جمعیت علماء اسلام(س) کی صوبائی عاملہ و شوریٰ کا اجلاس

لاہور (سٹاف رپورٹر) جمعیت علمائے اسلام (س) پنجاب صوبائی عاملہ و شوریٰ کا اجلاس زیر صدارت صوبائی امیر مولانا مفتی حبیب الرحمن درخواستی مہمان خصوصی مولانا عبد الرؤف فاروقی مرکزی سیکرٹری جنرل جے یو آئی (س) پاکستان ہوا ، اجلاس میں متفقہ طور پر قرار دادیں منظور کی گئیں، جن میں کراچی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں علمائے کرام، مذہبی و سیاسی رہنماؤں و کارکنان کی ٹارگٹ کلنگ کے واقعات کے خاتمے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھانے کا مطالبہ ، ڈاکٹر مولانا خالد محمود سومرو کے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ شامل ہے اجلاس میں جے یو آئی پنجاب کے نائب صدر مولانا عبدالرب امجد اور لاہور کے ناظم اعلیٰ قاری اعظم حسین سمیت دیگر بھی موجود تھے جے یو آئی (س) پنجاب میڈیا سیل کے صوبائی کوآرڈینیٹر پیر محمد یوسف بخاری کے مطابق مرکز شیرانوالہ گیٹ لاہور میں جے یو آئی (س) پنجاب کی صوبائی عاملہ و شوریٰ کا مشترکہ اجلاس میں متفقہ طور پر قرار دادیں منظور کی گئیں، حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ کراچی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں علمائے کرام ، مذہبی و سیاسی رہنماؤں و کارکنان کی ٹاگٹ کلنگ کے سلسلہ کو روکنے کیلئے فوری طور پر ٹھوس اقدامات اُٹھائے جائیں۔ مولانا ڈاکٹر خالد محمودسومرو کے قاتلوں کو فوری طور پر گرفتار کر کے قرارواقعی سزاد ی جائے ملک بھر میں تمام مذہبی جلوسوں اور مذہبی رسومات کو عبادت خانوں تک محدود کیا جائے نکلنے والے مذہبی جلوسوں کو ضابطہ اخلاق کا پابند بھی بنایا جائے ملک بھر میں اسلامی قانون کا نفاذ کیا جائے۔ ملک میں جاری سیاسی دہشت گردی اور سیاست کے نام پر پھیلائی جانے والی فحاشی و عریانی پھیلانے والے نام نہاد سیاستدانوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے اور انہیں 62 اور63 کے تحت قرار دلوایا جائے ناموس صحابہؓ و اہلبیتؑ کے کے تحفظ کیلئے گستاخانہ صحابہ کیلئے سزائے موت کا قانون پارلیمنٹ سے منظور کروایا جائے ملک بھر میں بے گناہ گرفتار سنی مذہبی رہنماؤں و کارکنان کو فوری طور پر رہا کیا جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1