جاوید مجید کے اوورسیز پاکستانیوں سے اربوں روپے کے فراڈ کا انکشاف

جاوید مجید کے اوورسیز پاکستانیوں سے اربوں روپے کے فراڈ کا انکشاف

لاہور(کرائم سیل )سابق چیف سیکرٹری آزاد کشمیر جاوید مجید کے اپنے بھائی نوید مجید سے مل کر اوورسیز پاکستانیز اور متعدد کاروباری افراد سے مبینہ طور پر اربوں روپے کے فراڈ کا انکشاف ہوا ہے ۔ سی سی پی او لاہور کی خصوصی ہدایت پر تھانہ اسلام پورہ اور تھانہ نشتر ٹاﺅن سمیت متعدد تھانوں میں فراڈ، دھوکہ دہی ، امانت میں خیانت اور بوگس چیکوں کے مقدمات درج کر کے پولیس نے تفتیش شروع کر دی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق جاوید مجید نے 25سال سے سعودی عرب میں مقیم واصف اصغر کو فیکٹری میں حصہ دار بنانے کا جھانسہ دیکر4کروڑ روپے ہتھیا لئے اور بعد ازاں جعلی چیک دیکر ٹرخا دیا گیا اور رقم واپس مانگنے پر سنگین نتائج کی دھمیکیاں دیں ۔ جس پر تھانہ اسلام پورہ پولیس نے جاوید مجید انکے بھائی نوید مجید سمیت متعدد افراد کے خلاف مقدمہ درج کر کے ملزم کو جمخانہ کے دروازے سے گرفتار کیا مگر بعد ازاں اعلی افسران کے دباﺅ پر 7گھنٹے تک حوالات میں رکھنے کے بعد مبینہ ملی بھگت کے ذریعے چھوڑ دیا جبکہ تھانہ نشتر ٹاﺅن نے بھی کروڑوں روپے کا فراڈ کر کے بعد ازاں بوگس چیک دینے کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کیا جس میں ملزم کو گناہ گار قرار دیا گیا ہے ۔ اوورسیز پاکستانیز واصف اصغر سمیت جاوید مجید کے فراڈ کا شکار ہونے والے متعدد افراد نے گورنر پنجاب محمدسرور سے تحریر ی درخواست کے ذریعے اپیل کی ہے کہ وہ ذاتی طور پر اس معاملے میں مداخلت کر کے ملزمان کو گرفتار کرائیں اور انصاف دلائیںبصورت دیگر گورنر ہاﺅس ایوان وزیر اعلی اور لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاج کرینگے اور بھوک ہڑتال کرینگے۔مدعی واصف اصغر نے پریس کلب کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انصاف نہ ملا تو اہل خانہ کے ہمراہ ایوان وزیر اعلی کے سامنے خود سوزی سے بھی گریز نہیں کرونگا۔

جاوید مجید فراڈ

مزید : صفحہ آخر