امریکہ میں10 سال کتوں کیساتھ گزارنے والے پاکستانی قیدی کی دہائی

امریکہ میں10 سال کتوں کیساتھ گزارنے والے پاکستانی قیدی کی دہائی
امریکہ میں10 سال کتوں کیساتھ گزارنے والے پاکستانی قیدی کی دہائی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نیویارک(نیوزڈیسک)یہ بات اکثر سننے کو ملتی ہے کہ مغرب میں انسان کیا جانوروں کے بھی بہت زیادہ حقوق ہیں تو ایسا نہیں مغرب کا معیار دوہرا ہے۔حال ہی میں ایک پاکستانی یونس رحمت اللہ نے امریکی اوربرطانوی حکومتوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا ہے اور ہرجانے کی درخواست بھی دائر کردی ہے۔ یونس کو برطانوی حکومت نے دہشت گردی کے الزام میں گرفتار کیا تھا اور کچھ عرصہ بعد اسے امریکی حکام کے حوالے کردیا ۔وہ 10 سال تک قید وبندکی صعوبتیں برداشت کرتا رہا ، بالآخر اسے بے گناہ قرار اوررہا کردیا ۔ رہائی کے بعد اس نے اپنی ان تکالیف کا ذکر کیا ہے جو اسے غیر قانونی قید کے دوران برداشت کرنی پڑی تھیں۔اپنے 62صفحات پر مشتمل بیان میں اس نے ان تمام باتوں کا ذکر کیا ہے جس کا سامنا اسے کرنا پڑا تھا۔اس کا کہنا ہے کہ برطانوی حکام نے پکڑتے ہی اسے تشدد کا نشانہ بنایا، زمین پر گھسیٹااور اسے ایک ایسے کنٹینر میں رکھا گیا جہاں اس کے ساتھ کتے بھی ہوتے تھے۔ اس کا مزید کہنا تھا کہ برطانوی خصوصی فورسز اس کے کھانے پر سگریٹ کا گل چھڑکتے تھے اور اسے یہ کھانے پر مجبور کیا جاتا تھا۔اس کا مزید کہنا تھا کہ اسے ایک ایسے یخ بستہ کنٹینر میں رکھا جاتا تھا جہاں اس پر ٹھنڈا پانی بھی ڈالا جاتا تھا۔

بےگناہ،تشدد

مزید : صفحہ آخر