آپ فیس بک کا استعمال ترک کرنے میں کامیاب کیوں نہیں ہوتے؟ سائنسدانوں نے لوگوں کو ’نشے‘ میں رکھنے کیلئے ویب سائٹ کے 4 حربے بے نقاب کردئیے

آپ فیس بک کا استعمال ترک کرنے میں کامیاب کیوں نہیں ہوتے؟ سائنسدانوں نے لوگوں ...
آپ فیس بک کا استعمال ترک کرنے میں کامیاب کیوں نہیں ہوتے؟ سائنسدانوں نے لوگوں کو ’نشے‘ میں رکھنے کیلئے ویب سائٹ کے 4 حربے بے نقاب کردئیے

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) آج کی نوجوان نسل نشے کی طرح سوشل میڈیا بالخصوص فیس بک کی لت میں پڑ چکی ہے۔ کئی لوگ اس سے جان چھڑانا بھی چاہتے ہیں مگر نہیں چھڑا پاتے۔ خود سے آئندہ فیس بک پر سائن ان نہ ہونے کے عہدوپیمان باندھتے ہیں لیکن کچھ ہی دنوں بعددوبارہ ویب سائٹ پر واپس آ جاتے ہیں۔آخر لوگ کیوں فیس بک سے جان نہیں چھڑوا پاتے؟ ماہرین نے اس کی 4وجوہات بیان کر دی ہیں۔امریکہ کی کارنیل یونیورسٹی کے ماہرین نے اپنی تحقیق میں ایسے 5ہزار لوگوں کو شامل کیا جو فیس بک چھوڑنا چاہتے تھے اور کوشش کے باوجود اس میں ناکام تھے۔ماہرین نے ان سے وعدہ لیا کہ وہ 99دن تک فیس بک استعمال نہیں کریں گے۔ اس دوران ہر 33دن بعد ماہرین نے ان کے ذہن کے کئی ٹیسٹ کیے اور ان کی عادات کا مشاہدہ کیا۔

مزید جانئے: سائنس کے مطابق اگر آپ چاہتے ہیں کہ لوگ آپ کے ایس ایم ایس پیغامات پر بھروسہ کریں، تو یہ ایک چیز لکھنے سے ہر صورت گریز کریں

بالآخر ماہرین اس نتیجے پر پہنچے کہ 4وجوہات ہیں جن کی بناءپر صارفین فیس بک پر واپس آ جاتے ہیں۔پہلی وجہ فیس بک کا عادی ہونا ہے۔ ایسے لوگ جو سمجھتے ہیں کہ فیس بک بری عادت کی طرح انسان کو چمٹ جاتی ہے، ان لوگوں میں چھوڑنے کے بعد واپس فیس بک آنے کے چانس زیادہ ہوتے ہیں۔ماہرین نے دوسری وجہ یہ بتائی ہے کہ صارفین دوسروں کے حوالے سے متجسس ہوتے ہیں کہ دوسرے ان کے بارے میں کیا سوچتے ہیں، یہ چیز بھی انہیں واپس فیس بک پر کھینچ لاتی ہے۔ماہرین نے جن لوگوں کو تحقیقات میں شامل کیا ان میں سے جو لوگ اچھے موڈ میں رہتے تھے ان کے فیس بک پر واپس آنے کی شرح بہت کم تھی۔ اس کے برعکس خراب موڈ میں رہنے والے افراد زیادہ تعداد میں واپس فیس بک کی طرف مائل ہوئے۔ اس چیز کو مدنظر رکھتے ہوئے ماہرین نے صارف کے موڈ کو تیسری وجہ بیان کیا ہے۔چوتھی وجہ کسی دوسری سوشل میڈیا ویب سائٹ سے منسلک نہ ہونا ہے۔ ایسے لوگ جو کسی دوسرے سوشل میڈیاٹوئٹر وغیرہ پر بھی اکاﺅنٹ رکھتے ہیں ان کے فیس بک پر واپس آنے کے امکانات کم ہوتے ہیں اور جن لوگوں کے اکاﺅنٹس صرف فیس بک پر ہی ہوتے ہیں وہ واپس فیس بک پر آ جاتے ہیں۔

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ایرک باﺅمرکا کہنا تھاکہ جب لوگ ایک بار فیس بک چھوڑ دیتے ہیں اور پھر واپس آتے ہیں تو ان کا فیس بک استعمال کرنے کا طریقہ تبدیل ہو جاتا ہے۔جو لوگ چھوڑنے کے بعد سائٹ پر واپس آتے ہیں وہ موبائل فون سے اس کی ایپلی کیشن ڈیلیٹ کرتے ہیں، بہت سے دوستوں کو” اَن فرینڈ“ کر دیتے ہیں اور سائٹ پر زیادہ وقت نہیں گزارتے۔ایرک باﺅمر کا کہنا تھا کہ اس تحقیق کے دوران ہمیں احساس ہوا کہ فیس بک چھوڑنے کے خواہش مند صارفین اس مقصد کے لیے کتنے مشکل فیصلے کرتے ہیں۔ وہ ایک طرف تو اپنے فیس بک کے دوستوں سے دور بھی نہیں جانا چاہتے اور دوسری طرف ہر وقت کی اس لت سے بھی نجات پانا چاہتے، جو یقینا بہت مشکل کام ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...