برطانوی نوجوان پر لندن میں حملے کی تیاری کا جرم ثابت

برطانوی نوجوان پر لندن میں حملے کی تیاری کا جرم ثابت

لندن (بیورورپورٹ) مغربی لندن سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان کو دولت اسلامیہ سے متاثر ہو کر لندن میں چاقو سے حملے کرنے کی تیاری کا مجرم قرار دیا گیا نادر سید جس کی عمر 22 سال ہے مغربی لندن کے علاقے ساتھ آل سے تعلق رکھتا ہے کو گزشتہ برس نومبر میں ریمیمبرنس سنڈے سے چند دن پہلے چاقو خریدنے کے کچھ ہی دیر بعد گرفتار کیا گیا تھا ولیچ کی کراؤن کورٹ میں سماعت کے دوران کہا گیا کہ نادر سید دولت اسلامیہ کے رہنماوں سے متاثر ہوئے جو لوگوں کو مغربی اہداف پر حملوں کے لیے اکسا رہے تھے ان اہداف میں پولیس اور فوجی بھی شامل تھے جیوری نے 50 گھنٹوں کے مجموعی غور و فکر کے بعد اکثریتی فیصلہ سنایا اور نادر سید کو مجرم قرار دیا عدالت کو بتایا گیا کہ نادر سید نے لِی رِگبی کے قاتلوں کے لیے تعریف کا اظہار کیا تھا اور یہ کہ اس نے شام اور عراق میں سر کاٹے جانے کی پر تشدد ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئر کی تھی عدالت میں کہا گیا کہ نادر سید نے شام جانے کی کوشش کی تھی تاکہ دولت اسلامیہ کے شدت پسندوں کے ساتھ مل کر لڑیں لیکن ا سے 2014 میں ملک چھوڑنے سے روک دیا گیا تھا تاہم جیوری کے زیر سماعت دو اور افراد حسیب ہمایوں اور یوسف سید کے کیس کے بارے میں کسی فیصلے پر نہیں پہنچ سکی۔

مزید : عالمی منظر


loading...