عالمی اتحاد کی سخت کارروائیوں سے داعش کو شکست ہو گی ، اوبامہ

عالمی اتحاد کی سخت کارروائیوں سے داعش کو شکست ہو گی ، اوبامہ

  واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی صدر بارک اوبامہ نے کہا ہے کہ داعش کے ٹھکانوں کو نشانہ بنانے کی عالمی اتحاد کی جو کارروائیاں اس وقت ہو رہی ہیں وہ پہلے کبھی اتنی سخت نہیں تھیں جن کے نتیجے میں یہ دہشت گرد تنظیم جلد ہی شکست سے دوچار ہو جائے گی۔ انہوں نے یہ بات نیشنل سکیورٹی کونسل کے ایک اہم اجلاس کی صدارت کے بعد پینٹا گون میں ایک خصوصی نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس نیوز کانفرنس کے موقع پر نائب صدر جوبائیڈن اور وزیر دفاع ایش کارٹر کے علاوہ اعلیٰ فوجی افسر بھی موجود تھے۔ صدر اوبامہ نے اعلان کیا کہ اس تقریب کے بعد ایش کارٹر عالمی اتحاد کو مزید مستحکم بنانے کے اہم مشن پر مشرق وسطیٰ روانہ ہو جائیں گے۔ صدر اوبامہ نے بتایا کہ حالیہ ہفتوں میں ہم نے دہشت گردوں کی لائف لائن یعنی تیل کے انفراسٹرکچر کو نشانہ بنانے کا نیا سلسلہ شروع کیا ہے جس کے دوران ان سینکڑوں ٹینکر ٹرکوں، کنوئیں اور ریفائنریز کو تباہ کردیا گیا ہے اور ہم اسے پوری شدت کے ساتھ جاری رکھیں گے۔ صدر اوبامہ کا کہنا تھا کہ ہماری کارروائیوں کے نتیجے میں داعش کے لیڈر ایک ایک کرکے ہلاک ہو رہے ہیں۔ اس وقت تک تقریباً 9 ہزار فضائی حملے کئے جاچکے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اتحادی بالکل صحیح نشانے لگانے کی کوشش کر رہے ہیں کیونکہ دہشت گرد شہری علاقوں میں گھس کر عام شہریوں کو انسانی شیلڈ بنانے میں مصروف ہیں۔ صدر اوبامہ نے مزید بتایا کہ فضائی حملوں کے ساتھ ساتھ ان کی اتحادی عراقی اور شامی افواج نے داعش سے ہزاروں مربع میل مقبوضہ علاقہ واپس لے لیا ہے۔ اس طرح دہشت گرد چالیس فیصد مقبوضہ علاقہ چھوڑنے پر مجبور کردیئے گئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ترکی کی سرحد کے ساتھ شام کے اندر سارا علاقہ داعش سے خالی کرالیا گیا ہے اور ترکی سے کہا جا رہا ہے کہ وہ باقی علاقے کو بھی سیل کردے۔ صدر اوبامہ نے بتایا کہ داعش کے خلاف شام اور عراق میں ہونے والی کارروائیوں کو یکسوئی سے جاری کرنے کیلئے شام کی حکومت کے ساتھ روس کی مدد سے امن مذاکرات شروع کرنے کی کوشش بھی کی جا رہی ہے۔

مزید : علاقائی


loading...