جعل سازی سے 600 ارب روپے کا ریفنڈ

جعل سازی سے 600 ارب روپے کا ریفنڈ

مکرمی! روزنامہ پاکستان کا ایک ادارتی نوٹ ’’جعلسازی سے 600 ارب کا ریفنڈ‘‘ کے عنوان سے شائع ہوا۔ خاصا فکر انگیز ادارتی نوٹ تھا۔ اس میں تحقیقات کی ضرورت پر زور دیا گیا تھا۔ میں اس ضمن میں وضاحت کیے دیتا ہوں کہ 36 ہزار فرموں اور کمپنیوں کو نوٹس بھی جاری ہوچکے تھے۔ ایف بی آر کی طرف سے ایک پٹھان افسر کو 6 کھرب کی ریکوری کے سلسلہ میں لاہور میں تعینات کیا گیا لیکن یہ کام روک دیا گیا کیونکہ 2013ء کے انتخابات کا اعلان ہوچکا تھا۔ ہماری لائن آف بزنس کے افراد کو اس افسر نے کہا: ’’خوچہ ہم کروڑوں کا غبن کرنے والوں کو تو پکڑ نہیں سکتا اوپر سے حکم نامہ جاری ہوگیا ہے، چنانچہ آپ بھی بھاگ جائیں‘‘۔ ایک قاری صاحب جو ایوان صنعت و تجارت کی تمام تقریبات میں ایک عرصہ سے تلاوت فرما رہے تھے، ان کا کیس جعلی ’’ڈیوٹی ڈرا بیک‘‘ تھا، وہ قسمت کا مارا ابھی تک جیل کی ہوا کھا رہا ہے۔ (نذر الرحمان رانا، ٹیک سوسائٹی، لاہور)

مزید : اداریہ


loading...