ماموں کا نج رقم ڈبل کرنے کا جھانسہ جعلسازوں نے شہریوں سے کروڑوں لوٹ لیے

ماموں کا نج رقم ڈبل کرنے کا جھانسہ جعلسازوں نے شہریوں سے کروڑوں لوٹ لیے

  ماموں کانجن(نمائندہ خصوصی)ماموں کانجن میں کرنسی نوٹ ڈبل کرنے کا جھانسہ دیکر جعلساز گروہ نے پنجاب بھر سے درجنوں لوگوں کو کروڑوں روپے سے محروم کر نے کا انکشاف ہوا ہے بتایا گیا ہے کہ ماموں کانجن میں ایک گروہ عرصہ دراز سے یہ دھندہ کرنے میں ملوث ہے اور اس کے ارکان پورے پنجاب کے مختلف شہروں میں موجود ہیں جو اپنے اپنے علاقوں سے لالچی لوگوں کو گھیر کر یہاں لاتے ہیں اور نوٹ بنانے کی شیشے کی ایک مشین کے ذریعے کاغذ کے ٹکڑے کو کوئی کیمیکل لگا کر مشین میں ڈال کر ان کے نوٹ بناکر دیکھاتے ہیں اور پھر کسی کو نہ بتانے کا حلف یا نہ بتانے کی ضمانت کے طور پر اس پارٹی سے خالی چیک اور پرنوٹ لیکرایک دو دن بعد اپنی ڈبل رقم لے جانے کا کہہ کر چلتا کرتے ہیں اور پھر ان کے قابو نہیں آتے معلوم ہوا ہے کہ اس گروہ کے ارکان جھانسے میں آ جانے والی پارٹی کو مشین کے ذریعے جو کرنسی نوٹ بنا کر دیکھاتے ہیں وہ اصل ہی ہوتے ہیں ان پر پہلے سے کیمیکل لگا کر انہیں سادہ کاغذ کی طرح بنا کر دیکھا دیا جاتا ہے اور پھر مشین کے اندر کسی دوسرے کیمیکل کے ذریعے ان نوٹوں پر لگایا کیمیکل اتار دیا جاتا ہے اور مشین سے نکال کر انہیں دیکھا کر شیشے میں اتارلیتے ہیں اور پھر ان سے لاکھوں روپے ٹھگ لیتے ہیں ایک محتاط اندازے کے مطابق پنجاب بھر سے درجنوں لالچی لوگ ان کے جھانسے میں آ کر ٹھگے جا چکے ہیں جن میں میاں چنوں کے رہائشی وسیم خاں کے 65لاکھ روپے،جھنگ کے رہائشی ذاکر علی کے 7لاکھ روپے،اجمل ساکن 451گ ب کے ڈیڑھ لاکھ روپے اور بانو نامی خاتون کے 50ہزار روپے ہیں لیکن پولیس مبینہ طور پر اس گروہ پر ہاتھ ڈالنے سے قاصر ہے ڈی ایس پی تاندلیانوالہ فضل عباس نے حسب سابق فون اٹینڈ نہیں کیا جبکہ مقامی پولیس کے مطابق انہیں اس جعلسازی کا علم تو ہے مگر اس گروہ کے خلاف کاروائی کرانے کوئی آتا ہی نہیں شائد اس لئے کہ گروہ کے ارکان متاثرین سے پہلے ہی چیک ،اشٹام پیپر اور پرنوٹ پیپر لے لیتے ہیں کچھ متاثرین کے مطابق انہیں پولیس یہ کہہ کر ٹرخا دیتی ہے کہ اس معاملے کا فراڈ کا مقدمہ ہی ہونا ہے جسکی عدالت دوسرے دن ضمانت لے لیتی ہے اس لئے مقدمہ درج کرانے کی بجائے پنچائتی طور پر رقم واپس لینے کی کوشش کر لیں۔

رقم ڈبل

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...