اسلام آباد میں لگائے گئے2100کیمرے3روز سے بند ہونیکا انکشاف

اسلام آباد میں لگائے گئے2100کیمرے3روز سے بند ہونیکا انکشاف

اسلام آباد (وحید ڈوگر سے ) وزارت داخلہ کی جانب سے فنڈز کی عدم دستیابی اسلام آباد کو کیمرے کی آنکھ سے مانیٹرکرنے کیلئے لگائے گئے 21سوکیمروں کے گزشتہ تین روزسے بند ہونے انکشاف باوثوق ذرائع کے مطابق وفاقی دارلحکومت میں اربوں روپے مالیت سے سیف سٹی پروجیکٹ منصوبے کو وزارت داخلہ کی جانب سے تیس اکتوبر سے قبل ہر حال میں مکمل کرنے کی ہدایت جاری کی گئی تھی جس کومالی وسائل کے باوجود شروع کر دیا گیا لیکن گزشتہ تین روز سے ہواوے کمپنی کو فیس کی عدم فراہمی کی وجہ سے شہر اقتدار کو کیمرے کی آنکھ سے مانیٹر کرنے کا عمل روک دیاگیا ہے اس حوالے سے ذرائع کا مذید کہناتھا کہ سیکٹر ایچ الیون میں نادرا آفس میں بنائے گئے کنٹرول روم کی جانب سے کئی بار وزارت داخلہ سے رابطہ کیا گیا لیکن خدا خدا کرکے شروع ہونے والے اس منصوبے پر ابھی تک فنڈجاری نہ ہونے کی وجہ سے شہر کی نگرانی کا عمل روک جانے کے ساتھ ساتھ شہر اقتدار میں بند پڑے 21سو کیمروں ذمہ دار وں کی نااہلی کا منہ چڑھا رہے ہیں اس حوالے ترجمان وزارت داخلہ نے روزنامہ پاکستان کے استفسار پر بتایا کہ کیمروں کی سروس اور فنڈز کی عدم فراہمی کے حوالے کوئی بھی معلومات علم میں نہیں اس حوالے سے سیف سٹی پروجیکٹ کو واچ کرنے والے افسران ہی بہتر کیمروں کی بندش کے حوالے سے بہتر بتا سکتے ہیں واضع رہے سیف سٹی منصوبہ سابقہ دور حکومت میں شروع کیا جانا تھا تاہم مبینہ کرپشن پر معاملہ سپریم کورٹ تک جا پہنچا خدا خدا کرنے موجودہ حکومت نے یہ منصوبہ شروع کروادیا اربوں روپے مالیت کے اس منصوبے کے تحت اسلام آباد کے داخلی اور خارجی راستوں اور شاہراؤں کو مانیٹر کیا جانا تھا

مزید : راولپنڈی صفحہ اول


loading...