بھارتی سرکاری تعلیمی اداروں نے کشمیری طلباءکو داخلہ دینے پر غیر اعلانیہ پابندی لگا دی

بھارتی سرکاری تعلیمی اداروں نے کشمیری طلباءکو داخلہ دینے پر غیر اعلانیہ ...
بھارتی سرکاری تعلیمی اداروں نے کشمیری طلباءکو داخلہ دینے پر غیر اعلانیہ پابندی لگا دی

  


نئی دہلی (ویب ڈیسک) بھارتی سرکاری تعلیمی اداروں نے کشمیری طلبا کو داخلے دینے پر غیر اعلانیہ پابندی لگا دی ہے، کشمیری طلبا کے لیے مختص کوٹہ پر بھی داخلے نہیں دیئے جا رہے ہیں۔ بھارتی وزیر تعلیم یر سمرتی ایرانی نے اعتراف کیا ہے کہ جموں وکشمیر کے طالبعلموں کوداخلہ نہ دئیے جانے بارے 20 شکایتیں وصول ہوئی ہیں۔ مقبوضہ کشمیر کی حکمران جماعت پی ڈی پی کی صدر محبوبہ مفتی نے فاضل کوٹہ کے تحت ملک کے تسلیم شدہ کالجوں اور یونیورسٹیوں میں جموں وکشمیر کے طالبعلموں کے داخلے سے متعلق یونیورسٹی گرانٹس کمشن (یو جی سی)سکیم کی موثر عمل آوری کے لئے ترقی انسانی وسائل کی بھارتی وزیر سے مداخلت کا مطالبہ کیا۔ لوک سبھا میں وقفہ سوالات کے دوران محبوبہ مفتی نے کہا کہ مائیگرنٹ کوٹہ کے علاوہ یونیورسٹی گرانٹس کمشن کے رہنما خطوط کے مطابق ملک کی تسلیم شدہ یونیورسٹیوں کو عمومی زمرے میں جموں و کشمیر کے طالبعلموں کو دو فاضل نشستوں پر داخلہ دینا ہے۔انہوں نے کہا کہ کچھ اطلاعات کے مطابق بیشتر یونیورسٹیوں نے جموں و کشمیر کے طالبعلموں کو اس کوٹہ کے تحت داخلہ دینے سے انکار کیا ہے۔ انہوں نے اس سلسلے میں ترقی انسانی وسائل کی بھارتی وزیر سمرتی ایرانی سے مداخلت کا مطالبہ کیا تاکہ ریاست کے طالبعلم اس سکیم سے متواتر طور مستفید ہوسکیں۔اس سے قبل ترقی انسانی وسائل کی وزیر نے لوک سبھا میں محبوبہ مفتی کی جانب سے اٹھائے گئے سوال کے تحریری جواب میں بتایا کہ اس قسم کی شکایتیں ملنے کے بعد یونیورسٹیوں کو تازہ ہدایات جاری کی گئی ہیںتاکہ جموں وکشمیر کے مستحق طالب علموں کو فاضل کوٹا کے تحت داخلے دئے جاسکیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...