نجی شعبہ کو فراہم کردہ قرضوں کی شرح میں 21فیصد اضافہ

نجی شعبہ کو فراہم کردہ قرضوں کی شرح میں 21فیصد اضافہ

لاہور(کامرس رپورٹر)بینکوں اور مالیاتی اداروں کی جانب سے نجی شعبہ کو فراہم کردہ قرضوں کی شرح میں مجموعی طور پر 21 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جبکہ اسلامی بینکاری کے شعبہ کی طرف سے قرضوں کے اجرا کی شرح میں 51 فیصد کا نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق گذشتہ دس سال کے دوران نجی شعبہ کو جاری کئے گئے قرضوں کی شرح میں ہونے والا سب سے زیادہ اضافہ ہے۔رپورٹ کے مطابق میکرو اکنامک اعشاریوں کی بہتری، کم شرح سود اور بینکوں اور مالیاتی اداروں کی جانب سے حکومتی پیپرز میں سرمایہ کاری کی بجائے نجی شعبہ کو قرضوں کے اجرا میں فوقیت کی وجہ سے قرضوں کے اجرا کی شرح میں نمایاں بہتری ریکارڈ کی گئی ہے۔ سٹیٹ بینک کے مطابق پاکستان میں کریڈٹ ٹو جی ڈی پی کی شرح دیگر ممالک کے مقابلہ میں کم ہونے کے باعث اس میں مزید اضافہ کے امکانات موجود ہیں۔ دوسری جانب نان پرفارمنگ لونز کی شرح بھی کنٹرول میں ہونے کے باعث بینکوں اور مالیاتی اداروں نے نجی شعبہ کو زیادہ سے زیادہ قرضے جاری کرنے کے حوالے سے ترجیح دی ہے۔

مزید : کامرس


loading...