مذاکرات ناکام ، وائس چیئر مینوں کا 18دسمبر کو دھرنے کا اعلان ، اب قیادت کے سوا کسی سے بات نہیں ہو گی ، متفقہ فیصلہ

مذاکرات ناکام ، وائس چیئر مینوں کا 18دسمبر کو دھرنے کا اعلان ، اب قیادت کے سوا ...

لاہور(جنرل رپورٹر) مسلم لیگ (ن) لاہور کے صدر اور وفاقی وزیر تجارت پرویز ملک کے ساتھ لاہور بھر کے احتجاجی وائس چیئرمینوں کے مذاکرت ناکام ہو گئے ہیں۔اس حوالے سے بات کرتے ہوئے لاہور بھر کے احتجاجی وائس چیئرمینوں کے کنوینر اور وائس چیئرمین یونین کونسل مرزا رضوان بیگ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مذکرات ناکام ہونے کے بعد وائس چیئرمین اپنے اعلان کردہ احتجاجی پروگرام 18دسمبر کو ہی ماڈل ٹاؤن میں احتجاجی دھرنا د یں گے اور اب ہمارے اس احتجاجی دھرنے میں صرف لاہور کے و ائس چیئرمین ہی شرکت نہیں کریں گے بلکہ پنجاب بھر کے چار ہزار سے زائد وائس چیئرمین بھی شرکت کریں گے جن کو ہم قذافی سٹیڈیم میں و یلکم کریں گے اور پھر ماڈل ٹاؤن کے پارک میں خیمے لگا کر اپنے مطالبات کی منظوری کے لئے غیر معینہ مدت تک احتجاجی دھرنا دیا جائے گا اور اب ہم میاں حمزہ شہباز شریف ‘ مریم نواز شریف اور میاں شہباز شریف کے علاوہ نہ تو وزیر بلدیات اور نہ ہی کسی ارکان قومی و صوبائی اسمبلی سے مذاکرت کریں گے اب فل اینڈ فائنل دھرنا ہو گا ہم اس دھرنے میں حکومت کو چوبیس گھنٹے کی مہلت دیں گے اگر ہمارے مطالبات کو پورا نہ کیا گیا تو پھر چوبیس گھنٹے کی ڈیڈ لائن کے بعد نہ صرف ہم مستعفی ہو جائیں گے بلکہ کسی اور جماعت میں شامل ہونے کا اعلان بھی کردیں گے اور اب یہ سلسلہ رکے گا نہیں بلکہ ہمارے اس دھرنے کے بعد ہمارا ساتھ دیتے ہوئے بائیس دسمبر کو کونسلرز بھی احتجاجی دھرنا دیں گے۔مرزا رضوان بیگ کا کہنا تھا کہ ہمارے ساتھ مذاکرت کرنے کے لئے گارڈن ٹاؤن کے ایک ہوٹل میں (ن) لیگ لاہور کے صدر پرویز ملک نے ہمیں بلایا تھا جن کے سامنے ہم نے اپنے مطالبات کو دوہرایا تھا لیکن انہوں نے ہمارے ان مطالبات کو ماننے کی بجائے اور اپنے پاس سے کچھ ایسی تجاویز دیکر ہمیں قائل کرنے کی کوشش کی جن کا کوئی فائدہ ہی نہیں اس لئے ہم نے ان سے مذاکرت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے کونسلرز کے ساتھ بھی معاملات طے پا گئے ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1