عالم اسلام بیت المقدس کی حفاظت کیلئے متحد ہوجائے، فلسطینی سفیر

عالم اسلام بیت المقدس کی حفاظت کیلئے متحد ہوجائے، فلسطینی سفیر

لاہور (آئی این پی)عالم اسلام اپنے اختلافات ختم کرکے بیت المقدس کی حفاظت کیلئے متحد ہوجائے۔امریکی صدر کا فیصلہ سفارتی دہشت گردی ہے ۔ امت مسلمہ امریکی صدر ٹرمپ کی طرف سے یروشلم کو اسرائیل کا دارلحکومت قراردینے کے فیصلے کو مسترد کرچکی ہے۔ امریکی صدر کے فیصلے سے عالم اسلام کو سخت صدمہ پہنچا ہے۔امریکی صدر ٹرمپ کا بیت المقدس سے متعلق اعلان امن عمل سے دستبرداری ہے۔ مسلم امہ کی صفوں میں اتحاد ویکجہتی نہ ہونے کی وجہ سے مسئلہ کشمیر اور فلسطین کے تنازعات پیدا ہوئے۔پاکستان علماء کونسل کی بیت المقدس کے تحفظ و سلامتی کیلئے جدوجہد قابل تحسین ہے۔ یہ بات پاکستان میں فلسطین کے سفیر ولید ابوعلی نے پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی سے ملاقات کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر مولانا ذو الفقار احمد ،حافظ محمد طیب قاسمی،حافظ مقبول احمد بھی موجود تھے۔ سفیر فلسطین نے کہا کہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قراردینا عالمی قوانین کے منافی اورسلامتی کونسل کی قراردادوں کی بھی خلاف ورزی ہے ۔انہوں نے کہا کہ مسلم امہ آزاد فلسطینی ریاست کے مطالبے سے کبھی دستبردار نہیں ہوگی۔انہوں نے کہا کہ جس طرح پاکستان،سعودی عرب اور ترکی نے بیک آواز ہوکر ٹرمپ انتظامیہ کے بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلہ کی مذمت کی۔ زاہد محمود قاسمی نے کہا کہ مسلم امہ درحقیقت باہمی تنازعات و اختلافات اور فروعی معاملات پر پیدا ہونے والے تضادات کے باعث زبوں حالی کا شکار ہے اور مسلم قیادتوں کی خاموشی اور لاپرواہی کے باعث اب تک اسلام کی نشاۃ ثانیہ کے احیاء کی راہ ہموار نہیں ہوسکی ۔اگر مسلم دنیا اپنے فروعی اختلافات اور ذاتی مفادات سے بالاتر ہوکر متحد ہوجائے تو اقوام عالم میں کسی کیلئے مسلم امہ کو زیر کرنا ممکن نہ رہے ۔دریں اثناء امریکی صدر ٹرمپ کی طرف سے سفارتخانہ تل ابیب سے یروشلم منتقل کرنے اور بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قراردینے کے اعلان کیخلاف زاہد محمود قاسمی اور مولانا شاہ نواز فاروقی کی اپیل پرملک گیر احتجاج کیاگیا اور ’’تحفظ مسجد اقصیٰ ‘‘ کے عنوان پر جمعہ کے خطبات دئیے گئے۔

فلسطینی سفیر

مزید : علاقائی


loading...