حدیبیہ کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے پر حیرانی ہوئی: قمر زمان کائرہ

حدیبیہ کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے پر حیرانی ہوئی: قمر زمان کائرہ

لاہور اوکاڑہ( این این آئی،بیورو رپورٹ)پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ اسپیکر قومی اسمبلی جمہوری نظام کیخلاف ہونے والی سازش اور خطرات سے ایوان کو آگاہ کریں اور اگر وہ ایسا نہیں کر سکتے تو پھر تمام پارلیمانی لیڈرز کو بلا کر ان سے شیئر کریں ، فاٹا انضمام کے معاملے میں مولانا فضل الرحمن اور محمود اچکزئی نے حکومت کیلئے ایک اور گڑھا کھو ددیا ہے ، ایم ایم اے کی بحالی کی بیل آسانی سے منڈھے چڑھتی ہوئی نظر نہیں آتی کیونکہ اگر مجوزہ معاہدے کے مطابق جماعتیں حکومتوں کے اتحاد سے باہر آتی ہیں تو پھر جماعت اسلامی کے باہر آنے سے خیبر پختوانخواہ اسمبلی نہیں چل سکے گی جبکہ مولانا فضل الرحمن اور ساجد میر بھی حکومت کے اتحاد ی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سابق رکن اسمبلی حسن مرتضیٰ کی رہائشگاہ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ قمر زمان کائرہ نے کہا کہ جمہوری نظام کو چلتے رہنا چاہیے اور یہ وقت کے ساتھ ساتھ جڑ پکڑے گا لیکن قبل از وقت انتخابات غیر جمہوری اور غیر آئینی اقدام نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کا حکومتوں پر تو دباؤ ہوتا ہے لیکن نظام پردباؤ نہیں ہوتا اوراسے ٹھیک کئے بغیر ہم منزل نہیں پاسکتے ۔ آج بھی لوگ نوکریوں، ٹرانسفر پوسٹنگ، گلی محلوں اور کھمبوں کیلئے ووٹ دیدیتے ہیں ،عوام کو اس کی بجائے درست لوگوں کا چناؤ کرنا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اسپیکر قومی اسمبلی کا بہت احترام کرتے ہیں لیکن وہ ٹھیک کام نہیں کر رہے وہ کبھی کبھی تو مسلم لیگ (ن) کے وکیل بن جاتے ہیں ۔ اسپیکر نے جو باتیں میڈیا میں کی ہیں انہیں ایوان میں اس پر کھل کر بات کرنی چاہیے ۔دریں اثنا قمر الزمان کائرہ نے اوکاڑہ میں خطا ب کرتے ہوئے کہا ہے کہ حدیبیہ کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے پر حیرانی ہے سپریم کورٹ کے اصرار پر ہی اپیل دائر کی تھی تاہم اس کا تفصیلی فیصلہ دیکھ کر ہی کچھ کہا جا سکتا ہے، عمران خان کے ارد گرد کھڑے کرپٹ عناصر اے ٹی ایم مشینیں ہیں عمران خان جتنی مرضی ڈگڈگی بجا لیں عوام کو مائل نہیں کر سکتے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سجاد الحسن چوہدری کی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سلمان قریشی ،کاظم پاشا ،انور سوہنا سمیت کارکنان کی بڑی تعداد موجود تھی قمر الزمان کائرہ نے کہا کہ’’اوکھے خان‘‘ نے اپنے ارد گرد کرپٹ لوگوں کا جھرمٹ لگا رکھا ہے جس کی وجہ سے اس کے چند ایک مخلص ساتھی بھی پریشان ہیں۔

مزید : صفحہ آخر