فاٹا کے عوام کے مستقبل کا فیصلہ قرار داد کے ذریعے نہ کیا جائے ،مفتی سید جنان

فاٹا کے عوام کے مستقبل کا فیصلہ قرار داد کے ذریعے نہ کیا جائے ،مفتی سید جنان

پشاور( نیوز رپورٹر) خیبر پختونخوا اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں شروع ہوا صوبائی وزیر تعلیم کی جانب سے وزیر قانون وپارلیمانی امور امتیاز شاہد قریشی ایڈوکیٹ نے خیبر پختونخوا ایمپلائز آف دی ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ (اپوائنمنٹ اینڈ ریگولرائز یشن آف سروسیز) بل 2017ء ایوان میں پیش کی وزیر قانون نے مذکورہ بل فوری طور پر ایوان میں زیر غور لانے اور منظور کرنے کی تحاریک پیش کیں اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک ،مسلم لیگ ن کے پارلیمانی لیڈر سردار اورنگزیب نلوٹھا اور پی پی پی کی نگہت اورکزئی نے مذکور ملازمین کو تاریخ تعیناتی سے مستقل کرنے اور مراعات دینے پر زور دیا جبکہ اس سلسلے میں جے یو آئی (ف) کے مولانا فضل غفور اور تحریک انصاف کے عارف احمد زئی نے اس حوالے سے بل میں ترامیم کیں اور ایوان نے ترامیم سمیت بل کی منظوری دے دی جس کے ساتھ ہی محکمہ ایلیمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن میں این ٹی ایس کے ذریعے بھرتی کئے جانے والے ایڈہاک اساتذہ کی ملازمت تعیناتی کی تاریخ سے مستقل ہوگئی ایوان نے وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی کی پیش کردہ قرار داد اتفاق رائے سے منظور کی جس میں صوبائی اسمبلی کی توسط سے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ فاٹا کو خیبر پختونخوا صوبہ میں ضم کرنے کیلئے فوری طور پر پارلیمنٹ سے ضروری قانون سازی کرے اور فاٹا کے عوامکے اس دیرینہ مطالبہ کو منظور کرے قرار داد پر ان کے علاوہ صوبائی وزراء محمد عاطف خان ،حاجی حبیب الرحمان اور ارکان اسمبلی محمود جان ،نگہت اورکزئی ،انیسہ زیب طاہر خیلی ،سردار حسین بابک ،محمد عارف احمد زئی اور عبدالمنعیم خان کے دستخط تھے جے یو آئی(ف )کے مولانا مفتی سید جنان نے کہا کہ فاٹا کے عوام کے مستقبل کا فیصلہ ایک قرار داد کے ذریعے نہ کیا جائے انہوں نے بعد ازاں قرار داد کی مخالفت کی اور کہا کہ قبائلی عوام کی مشاورت کے بغیر ایسی قرار دادیں لانا فاٹا کے عوام کے ساتھ زیادتی ہے خاتون نگہت اورکزئی نے سسرالیوں کے ہاتھوں ایک خاتون کی مبینہ قتل کا معاملہ نکتہ اعتراض پر اٹھایا اور اس کی تفتیش کیلئے کمیٹی کی تشکیل پر زور دیا صوبائی وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی نے کہا کہ اس سلسلے میں تفتیش جاری ہے اس لئے ہم اس کیلئے کمیٹی نہیں بناسکتے خواتین اراکین معراج ہمایون اور انیسہ زیب طاہر خیلی نے کہا کہ یہ سب جوڈیسی نہیں کیس عدالت میں نہیں انہوں نے پولیس تفتیش کی رپورٹ منگوانے پر زور دیا وزیر قانون امتیاز شاہد نے کہا کہ تفتیش کے دوران دوسری کمیٹی نہیں بنائی جاسکتی البتہ رپورٹ منگوائی جائے گی وزیر تعلیم محمد عاطف خان نے ایوان کو بتایا کہ مثال کیس میں 26 ملزم اور ڈیرہ کیس میں 8 ملزم گرفتار کئے جاچکے ہیں حکومتی رکن محمود جان نے توجہ دلاؤ نوٹس پر موقف اختیار کیا کہ گنے کا کرشنگ سیزن 15 نومبر کو شروع ہوتا ہے لیکن 15 دسمبر تک شروع نہیں کیا جاسکا جبکہ گنے کا 40 کلو گرام ریٹ بھی دو سال سے ایک ہی چلا آرہا ہے انہوں نے کرشنگ شروع کرنے اور قیمت بڑھانے کا مطالبہ کیا صوبائی وزیر عاطف خان نے ایوان کو بتایا کہ 180 روپے فی چالیس کلو ریٹ تینوں صوبوں میں یکساں ہے اگر ریٹ کم ہوا ہے تو اس کی تحقیقات کی جائیں گی اے این پی کے سردار حسین بابک نے اس مسئلے کو انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے اس پر مشاورت کرنے پر زور دیا اور گڑ گھانیوں کو انکرج کرنے پر بھی زور دیا صوبائی وزیر تعلیم نے تجویز سے اتفاق کیا جس کے بعد سپیکر اسد قیصر نے توجہ دلاؤ نوٹس مشاورت کیلئے سٹینڈنگ کمیٹی کے سپرد کردیا پی پی پی کے صاحبزادہ ثناء اللہ نے توجہ دلاؤ نوٹس پر موقف اختیار کیا تھا کہ محکمہ عملہ کی سٹینڈنگ کمیٹی کی رپورٹ اسمبلی کی منظوری کے بعد عمل در آمد کیلئے محکمہ عملہ اور محکمہ خزانہ کو ارسال کردی گئی تھی مگر تاحال اسے عملی جامہ نہیں پہنایا گیا ہے صوبائی وزیر امتیاز شاہد قریشی ایڈوکیٹ نے ایوان کو بتایا کہ محکمہ عملہ نے یہ معاملہ فوری کارروائی کیلئے محکمہ خزانہ کو ارسال کردیا وزیر قانون وپارلیمانی امور امتیاز شاہد قریشی ایڈوکیٹ نے وزیر اعلیٰ کی جانب سے خیبر پختونخوا پبلک سروس کمیشن (ترمیمی) بل 2017ء ایوان میں پیش کئے قومی وطن پارٹی کی انیسہ زیب طاہر خیلی نے بے نظیر بھٹو وویمن یونیورسٹی کے کلاس فور کے بھرتیوں سے محروم خاندانوں کے اسمبلی کے باہر کفن پوش مظاہر اور بی آر ٹی منصوبے میں یادگار حیات ہٹانے کا معاملہ ایوان میں اٹھایا وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی نے کہا کہ یادگار حیات کو کسی بہتر اچھی جگہ پر منتقل کیا جائیگا سپیکر نے اجلاس 15 جنوری تک کیلئے ملتوی کردیا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر