مرکزی انجمن تاجران کی تنظیم میں مداخلت کرنے پر تاجر سراپا احتجاج

مرکزی انجمن تاجران کی تنظیم میں مداخلت کرنے پر تاجر سراپا احتجاج

نوشہرہ(بیورورپورٹ) مرکزی انجمن تاجران ضلع نوشہرہ کی تنظیم میں مداخلت کرنے پر ضلع نوشہرہ کے تاجر سراپا احتجاج نام نہاد ضلعی تنظیم سے وزیر اعلیٰ ہاوس میں حلف لینے کو نوشہرہ کی تاجر برادری کے خلاف سازش قرار دے دیا گیا تاجر تنظیم کی رجسٹریشن رکوانے کیلئے وزیر اعلیٰ ہاوس سے لیبر ڈیپارٹمنٹ پر دباو ڈالا جارہا ہے جو قابل مذمت ہے تاجر برادری ریٹر ھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اگر صوبائی حکومت نے نوشہرہ تاجر برادری کے خلاف سازشیں بند نہ کی تو خیبر پختونخواہ سمیت ملک بھر کی تاجر تنظیمیں خیبر پختوخواہ حکومت کے خلاف سراپا احتجاج بن جائے گی ان خیالات کا اظہار مرکزی انجمن تاجران کے صدر آیاز پراچہ ، جہانگیرہ کے صدر فضل الرحمان ، اکوڑہ خٹک کے صدر کلیم صدیقی ، نوشہرہ کلاں کے صدر زاکر حسین ، رشکئی کے صدر محمد فاروق خان ، رسالپور کے صدر محمد اسلام خان نے نوشہرہ پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پرویز خان خٹک ایک زیرک سیاستدان ہے لیکن ہم حیران ہیں کہ ان جیسی شخصیت نے اپنے ارد گرد بیٹھے ہوئے سازشیوں کے کہنے پر ایک جعلی اور غیر منتخب تنظیم سے وزیر اعلیٰ ہاوس میں حلف لیا کیونکہ بیس کے ٹولے کی تنظیم نے انتخابات نہیں کئے بلکہ وہ ایک شکست خوردہ ٹولہ ہے اور وزیر اعلیٰ نے اسی شکست خوردہ عناصر سے حلف لیا ہے اگر یہ تبدیلی اور میرٹ ہے تو پھر تو تحریک انصاف کا خدا حافظ عمران خان اور وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے عوام اور تاجر برادری کے ساتھ جو وعدے کئے تھے اس کو پس پشت ڈال کر سازشی عناصر کے کہنے پر تاجر برادری کے پیٹ میں چرا گھونپ دیا ہے انہوں نے کہا کہ جعلی تنظیم کو عہدوں کا شوق ہے تو ہمارے ساتھ آکر ضلع میں الیکشن کریں انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک ہمارے ساتھ ہونے والے ظلم اور زیادتی کے خلاف انکوائری کمیٹی قائم کرکے اعلیٰ سطح تحقیقات کریں کیونکہ انتخابات سرپر آچکے ہیں تاجر برادری کے خدشات کو فوری طورپر دور کریں بصورت دیگر ہم وزیراعلیٰ ہاؤس اور صوبائی اسمبلی کے سامنے دھرنا دے کر گھیراؤ کریں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...